پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کے وقت جاوید ہاشمی قومی اسمبلی کے رکن نہ تھے: الیکشن کمیشن

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کے وقت جاوید ہاشمی قومی اسمبلی کے رکن نہ ...
پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کے وقت جاوید ہاشمی قومی اسمبلی کے رکن نہ تھے: الیکشن کمیشن

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے انکشاف کیا گیا ہے کہ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے وقت جاوید ہاشمی قومی اسمبلی کے رکن ہی نہ تھے۔ کمیشن نے کہا ہے کہ جاوید ہاشمی نے استعفیٰ 18اگست کو دیا اور اسی روز استعفیٰ اسپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کی جانب سے منظور کر لیا گیا جبکہ جاوید ہاشمی کی جانب 2ستمبر کے اجلاس میں خطاب کیا گیا تھا۔ الیکشن کمیشن کو استعفے کا نوٹیفیکیشن 3ستمبر کو ارسال کیا گیا جس میں لکھا گیا ہے کہ یہ نشست 18اگست سے خالی تصور کی جائے، جس کے مطابق 16اکتوبر تک ضمنی انتخاب کا انعقاد ہو نا تھا ، جس کا شیڈول 31اگست تک جاری کیا جانا ضروری تھا مگر اسپیکر کی جانب سے اس غیر ضروری تاخیر کے باعث اب مشکلات کا سامنا ہے۔ الیکشن کمیشن نے ریٹرننگ آفیسر کی تعیناتی کے لئے لاہور ہائیکورٹ سے بھی رجوع کر لیا ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...