سعودی عرب سے آئی تشویشناک خبر رواں برس 25سال پرانا ریکارڈ ٹوٹ جائے گا

سعودی عرب سے آئی تشویشناک خبر رواں برس 25سال پرانا ریکارڈ ٹوٹ جائے گا
سعودی عرب سے آئی تشویشناک خبر رواں برس 25سال پرانا ریکارڈ ٹوٹ جائے گا

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) گزشتہ ایک سال کے دوران تیل کی قیمتوں میں غیر معمولی کمی دیکھنے میں آئی ہے اور اب یہ خبریں بھی سامنے آرہی ہیں کہ تیل برآمد کرنے والا سب سے بڑا ملک سعودی عرب قیمتوں میں اس کمی کی وجہ سے شدید متاثر ہورہا ہے۔

نیوز سائٹ emirates247.com کے مطابق رواں سال سعودی عرب کا مالی خسارہ اس قدر زیادہ ہونے کا خدشہ ہے کہ گزشتہ 25 سال کا ریکارڈ ٹوٹ سکتا ہے۔ مملکت کے سب سے بڑے بینک، نیشنل کمرشل بینک، کا کہنا ہے کہ 2015ء میں آمدن اور اخراجات کا توازن برقرار رکھنے کے لئے تیل کی قیمت تقریباً 91.9 ڈالر (تقریباً 9200 پاکستانی روپے) فی بیرل ہونا ضروری ہے جبکہ خام تیل کی اصل قیمتیں تقریباً 65 ڈالر (تقریباً 6500 پاکستانی روپے) فی بیرل رہ سکتی ہیں۔ بینک کی طرف سے کی جانے والی سٹڈی میں معلوم ہوا ہے کہ تیل کی قیمتوں میں کمی اور اخراجات میں اضافے کی وجہ سے رواں سال آمدنی میں 29 فیصد کی غیر معمولی کمی ہوسکتی ہے۔ اس سٹڈی کے مطابق سال 2014ء میں مملکت کی کل آمدن 1044 ارب ریال تھی جو کہ اس سال 741 ارب ریال پر آسکتی ہے۔

مزید : بین الاقوامی