حکومت معاملات بگڑنے سے قبل ودہولڈنگ ٹیکس واپس لے

حکومت معاملات بگڑنے سے قبل ودہولڈنگ ٹیکس واپس لے

لاہور(کامرس رپورٹر)لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے نائب صدر سید محمود غزنوی نے بینکوں سے لین دین پر ودہولڈنگ ٹیکس کے معاملے پر تاجروں کی ہڑتال پالیسی میکرز کے لیے چشم کشا قرار دیتے ہوئے حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ معاملات کو مزید بگڑنے سے بچانے کے لیے ودہولڈنگ ٹیکس فوری طور پر واپس لینے کا اعلان کرے۔ تاجروں کے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے لاہور چیمبر کے نائب صدر نے کہا کہ تاجروں کی ایک دن کی ہڑتال سے ملکی معیشت کو اربوں روپے کا نقصان ہوا ، اگر تاجروں نے غیرمعینہ مدت کے لیے ہڑتال کی تو اس کے بہت بھیانک نتائج برآمد ہونگے جس کی معیشت ہرگز متحمل نہیں ہوسکتی۔ سید محمود غزنوی نے کہا کہ حکومت اس معاملے کو انا کا مسئلہ بناکر معاشی مفادات کو داؤ پر ہرگز نہ لگائے ۔تاجر محب وطن ہیں اور ملک کی ترقی و خوشحالی کے لیے خاموش سپاہی کا کردار ادا کررہے ہیں لہذا ضروری ہے کہ حکومت انہیں سہولیات دے نہ کہ بینکوں سے لین دین پر ٹیکس عائد کرکے اْن کے مسائل میں بہت زیادہ اضافہ کردے۔ سید محمود غزنوی نے کہا کہ بینکوں سے لین دین پر ودہولڈنگ ٹیکس عائد کرنا بالکل غیر دانشمندانہ فیصلہ ہے کیونکہ بینکوں کے پاس فائلر اور نان فائلر کے درمیان فرق جانچنے کے لیے قابل اعتماد ڈیٹا ہی نہیں جس کی وجہ سے بینکوں نے فائلر اور نان فائلر دونوں سے ودہولڈنگ ٹیکس وصول کیا ہے جس کا اعتراف وزیرخزانہ اسحاق ڈار خود کرچکے ہیں۔

،ان حالات میں ودہولڈنگ ٹیکس عائد کرنا معاملات کو خراب کرنے کے سوا اور کچھ بھی نہیں ہوگا۔ لاہور چیمبر کے نائب صدر نے کہا کہ ودہولڈنگ ٹیکس کے خلاف شدید احتجاج کرتے ہوئے تاجروں نے بینکوں سے لین دین بند کردیا ہے جس کی وجہ سے بینکنگ سیکٹر تباہی کی طرف گامزن ہے ، اگر پالیسی میکرز نے ہوش کے ناخن نہ لیے تو بینکنگ سیکٹر بالکل تباہ ہوجائے گا اور متوازی بینکاری کو فروغ حاصل ہوگا۔ سید محمود غزنوی نے کہا کہ بینکوں سے لین دین پر ودہولڈنگ ٹیکس کے خلاف اس قدر وسیع پیمانے پر ہڑتال لمحہ فکریہ ہے لہذا حکومت معیشت کو تباہی سے بچانے کے لیے ودہولڈنگ ٹیکس فوری طور پر واپس لے اور ٹیکس نیٹ کو وسعت دینے کے لیے قابلِ عمل اقدامات اٹھائے۔

مزید : کامرس