کراچی ، ایک ہی خاندان کے چار افراد کو بیدردی سے قتل کر دیا گیا ، گھر نذر آتش

کراچی ، ایک ہی خاندان کے چار افراد کو بیدردی سے قتل کر دیا گیا ، گھر نذر آتش

  کراچی ( اے این این ) کراچی کے علاقے منظور کالونی میں نامعلوم افراد نے ایک ہی خاندان کے چار افراد کو بیدردی سے قتل کردیا ٗ قتل ہونے والوں میں میاں بیوی اور دو بچے شامل ٗ ایک بچہ شدید زخمی ٗ تمام افراد کو تیزدھار آلے کی مدد سے موت کے گھاٹ اتارا گیا ٗملزمان نے واردات سے قبل مقتولین کو بے ہوش کیا پھر شواہد مٹانے کی غرض سے گھر کو آگ لگا دی ٗ فرار ہونے میں کامیاب ٗطارق نامی گھر کا سربراہ اڑھائی سال سے علاقے میں رہائش پذیر تھا ٗقتل ہونے والے افراد کی شناخت 45 سالہ محمد طارق، 40 سالہ ثمینہ، 15 سالہ رومیسا اور 13سالہ سعد کے ناموں سے ہوئی ٗ 8سالہ حماد زخمی ہوا ٗ لاشوں کو جناح ہسپتال منتقل کردیاگیا ٗ پولیس نے مقدمہ درج کرکے تحقیقات شروع کردیں۔ تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے منظور کالونی میں نامعلوم افراد نے جدون چوک کے قریب واقع گھر میں گھس کر میاں بیوی اور 2بچوں کو قتل جبکہ ایک بچے کو زخمی کردیا اور پھر گھر کو آگ لگا کر فرار ہو گئے۔پولیس حکام کے مطابق نامعلوم افراد نے چاروں کو تیز دھار آلے کی مدد سے قتل جبکہ ایک بچے کو زخمی کردیا۔ قتل ہونے والے افراد کی شناخت 45 سالہ محمد طارق، 40 سالہ ثمینہ، 15سالہ رومیسا اور 13سالہ سعد کے ناموں سے ہوئی جبکہ 8سالہ حماد زخمی ہوا جسے جناح ہسپتال منتقل کردیاگیا ہے۔ ابتدائی تحقیقات کے مطابق ملزمان نے واردات سے قبل مقتولین کو بے ہوش کیا اور پھر آگ لگا کر شواہد مٹانے کی کوشش بھی کی۔مقتول طارق کے چچا نے میڈیا کو بتایا کہ گھر سے دھواں نکلتا دیکھنے پر واقعے کا علم ہوا ، مقتول طارق کا تعلق ڈیرہ اسماعیل خان سے تھا اور ہماری کسی سے ذاتی دشمنی نہیں ہے ۔پولیس کے مطابق محمد طارق کا ایک بیٹا حماد زخمی ہوا اور تیسرا بیٹا محمد باسط وقوعہ کے وقت مدرسے میں تھا ۔ علاقہ مکینوں کے مطابق مقتول قاری طارق گھر گھر جا کر بچوں کو قرآن پڑھایا کرتا تھا ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ابتدائی طور پر واقعہ ذاتی دشمنی کا شاخسانہ معلوم ہوتا ہے تاہم اس واقعے کی مزید تفتیش جاری ہے ۔ پولیس کے مطابق گیارہ سالہ زخمی بچے حماد نے پولیس کو اپنا بیان ریکارڈ کر ادیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ میرے ابو نے اپنے دوست سے مل کر میری ماں ،بھائی اور بہن کو قتل کیا اس کے بعد میں بے ہوش ہو گیا ۔ پولیس کا کہنا ہے کہ گھر کے سربراہ طارق نے اپنے دوست سے مل کر بیوی ایک بیٹا اور ایک بیٹی کو قتل کیا ، ایک بچہ زخمی ہو گیا ، دوست نے گھر کے سربراہ طارق کو قتل کیا اورگھر کو اٰگ لگا کر فرار ہو گیا ۔ مزید تحقیقات جاری ہیں ۔

کراچی (این این آئی) شہرقائد میں بدھ کو ایک بار پھر ٹارگٹ کلرز پھر سرگرم نظر آئے۔ فائرنگ ، ڈکیتی مزاحمت اور پرتشدد واقعات میں صحافی، بچے اور مذہبی جماعت کے کارکنوں سمیت 5افراد نامعلوم گولیوں کا نشانہ بن گئے۔ تفصیلات کے مطابق سرسید تھانے کی حدود نارتھ کراچی 11-Cمیں صدیقی مارکیٹ کے قریب فائرنگ سے سینئر صحافی 42سالہ آفتاب عالم ولد ضیاء الحق نامعلوم افراد کی فائرنگ سے زخمی ہوگئے جنہیں فوری طور ر عباسی شہید اسپتال منتقل کیا گیا تاہم وہ جانبر نہ ہوسکے ۔ایم ایل او عباسی شہید اسپتال نے آفتاب عالم کے دم توڑنے کی تصدیق کی ہے ۔ایم ایل او کے مطابق آفتاب عالم کے چہرے پر گولی لگی ہے ، جس کے باعث وہ جاں بحق ہوگئے ۔دہشت گردی کا نشانہ بننے والے آفتاب عالم جیونیوز،سما نیوز سمیت مختلف اداروں سے وابستہ رہ چکے ہیں،پولیس نے واقعے کی تفتیش شروع کردی ہے۔ڈی آئی جی ویسٹ فیروز شاہ کا کہنا ہے کہ موٹر سائیکل پر سوار مسلح افراد نے آفتاب عالم کے سر میں گولی ماری۔ادھر وزیر داخلہ سندھ سہیل انو ر سیال نے آفتاب عالم کے قتل کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی آئی جی ویسٹ سے واقعہ کی رپورٹ طلب کرلی ہے ۔انہوں نے ملزمان کی فوری گرفتاری کے احکامات بھی دیئے ۔واضح رہے کہ شہر قائد میں 24 گھنٹوں کے دوران میڈیا سے تعلق رکھنے والوں پر دوسرا حملہ ہے۔ گزشتہ رات جیو نیوز کی گاڑی پر بہادر آباد کے علاقے میں فائرنگ کی گئی تھی جس میں سیٹلائٹ انجینئر جاں بحق اور ڈرائیور زخمی ہوگیا تھا۔ دوسری جانب نیو کراچی کے علاقے سیکٹر 5-Jپیلا اسکول کے قریب موٹر سائیکل ملزمان نے فائرنگ کرکے المدینہ بیکری کے مالک 45 سالہ عمران ولد اقبال اور ملازم40سالہ وقار کو قتل کردیا ۔مقتولین اسی علاقے کے رہائشی اور اہلسنت والجماعت کے ہمدرد بتائے جاتے ہیں ۔ایس پی کراچی وسطی مقدس حیدر کا کہنا ہے کہ آفتاب عالم اورپیلااسکول فائرنگ میں ایک ہی گروپ ملوث ہے، دونوں واقعات میں نئی موٹرسائیکل استعمال کی گئی تاہم دونوں واقعات کے ملزمان کے حلیے بھی ایک جیسے ہیں ۔سولجر بازار میں ڈکیتی کے دوران فائرنگ سے 8 سال کا بچہ جاں بحق ہوگیا۔پولیس نے ایک ڈاکو کو رنگے ہاتھوں گرفتار کرلیا ہے۔شاہ فیصل کالونی کے علاقے میں نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ سے ایک شخص چل بسا۔ مقتول کی شناخت 28 سالہ قاسم قادری کے نام سے ہوئی ہے۔ سنی تحریک کے ترجمان کے مطابق قاسم قادری ان کا کارکن تھا۔

مزید : صفحہ اول