بلدیاتی الیکشن ٹربیونل کیلئے 38ریٹائر سیشن ججوں کی فہرست الیکشن کمیش کو ارسال

بلدیاتی الیکشن ٹربیونل کیلئے 38ریٹائر سیشن ججوں کی فہرست الیکشن کمیش کو ارسال

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائی کورٹ نے حاضر سروس سیشن ججوں اور ایڈیشنل سیشن ججوں کوبلدیاتی انتخابی عذرداریوں کی سماعت کے لئے الیکشن ٹربیونل مقرر کرنے سے انکار کردیا ہے تاہم 38ریٹائرڈ سیشن ججوں کی فہرست الیکشن کمشن پاکستان کو بھجوادی ہے تاکہ ان میں سے مناسب افراد کا چناؤ کرکے انہیں الیکشن ٹربیونلز مقرر کیا جاسکے ۔چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس منظور احمد ملک نے اس سے قبل بھی عدالت عالیہ کے ججوں کوجنرل الیکشنز کی انتخابی عذرداریوں کی سماعت کے لئے الیکشن ٹربیونل مقرر کرنے سے متعلق چیف الیکشن کمشنر کی درخواست مسترد کردی تھی ۔اب الیکشن کمشن کی طرف سے ہائی کورٹ سے درخواست کی گئی تھی کہ سیشن ججوں یا ایڈیشنل سیشن ججوں میں سے بلدیاتی الیکشن کی انتخابی عذرداریوں کی سماعت کے لئے الیکشن ٹربیونلز مقرر کئے جائیں ۔لاہور ہائی کورٹ نے اس معاملہ کا جائزہ لینے کے بعد قرار دیا ہے کہ متعلقہ رولز اور قوانین کے تحت ہائی کورٹ کو الیکشن ٹربیونلز مقرر کرنے کا اختیار حاصل نہیں ہے ،چیف جسٹس منظور احمد ملک برادر ججوں کی مشاورت کے بعد حاضر سروس سیشن ججوں اور ایڈیشنل سیشن ججوں کو الیکشن ٹربیونل مقرر کرنے سے انکار کردیا جبکہ 38ریٹائرڈ سیشن ججوں کی فہرست الیکشن کمشن کو بھجوا دی ہے جن میں سے الیکشن ٹربیونلز کا تقرر عمل میں لایا جاسکتا ہے ۔

ارسال

مزید : صفحہ آخر