مختلف معاملات میں مذہب کا استعمال بند کیا جائے، گوشت پر پابندی سمجھ سے بالاتر ہے: رشی کپور

مختلف معاملات میں مذہب کا استعمال بند کیا جائے، گوشت پر پابندی سمجھ سے ...
مختلف معاملات میں مذہب کا استعمال بند کیا جائے، گوشت پر پابندی سمجھ سے بالاتر ہے: رشی کپور

  

ممبئی (مانیٹرنگ ڈیسک) بالی ووڈ کے کئی اداکار اور حسینائیں مودی سرکاری کی جانب سے بھارت کی مختلف ریاستوں میں گائے کے گوشت کی فروخت پر پابندی کے خلاف میدان میں آگئے ہیں جس کے باعث انتہاءپسند ہندو شہریوں میں غم و غصے کی لہر دوڑ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق بالی ووڈ کے اداکار رشی کپور اپنے بے باک خیالات کے باعث کافی شہرت رکھتے ہیں اور کئی معاملات پر کھل کر تنقید کرتے ہیں اور اب انہوں نے مہاراشٹرا حکومت کی جانب سے گوشت کی خرید و فروخت پر پابندی کے خلاف بھی آواز بلند کر دی ہے جو بھارتیوں کو ایک آنکھ بھی نہیں بھا رہی۔ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ”ٹوئٹر“ پر جاری ایک بیان میں رشی کپور نے کہا کہ بھارت میں مختلف معاملات میں مذہب کے استعمال کا سلسلہ بند کیا جائے، ”ملک میں کبھی رادھا ماں اور کبھی گوشت پر پابندی لگائی جاتی ہے جو سمجھ سے بالاتر ہے“۔

اس سے قبل بالی ووڈ اداکارہ سونم کپور اور سوناکشی سنہا بھی گوشت پر پابندی کے خلاف آواز اٹھا چکی ہیں جس کے بعد انہیں کافی تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ دنوں بھارتی ریاست مہاراشٹرا میں گائے کا گوشت رکھنے اور فروخت کرنے پر پابندی عائد کردی گئی تھی جبکہ حال ہی میں ممبئی میں گوشت کی فروخت پر پابندی کے علاوہ گجرات کی ریاست میں اس پابندی کے حق میں ایک تشہیری مہم کا آغاز بھی کیا گیا ہے جس میں قرآن کا حوالہ دے کر یہ ثابت کرنے کی کوشش کی گئی ہے کہ قرآن میں بھی گائے کا گوشت کھانے کی ممانعت ہے۔ دوسری جانب مقبوضہ کشمیر کی ہائیکورٹ نے بھی کشمیر میں گائے کے گوشت کی خریدو فروخت پر پابندی عائد کرتے ہوئے انتظامیہ کو اس پر سختی سے عملدرآمد یقینی بنانے کی ہدایت کی ہے۔

مزید : تفریح