مقابلہ حسن میں ایک روبوٹ کو جج بنادیا، اس نے کس طرح کی خواتین کو حسین ترین قرار دے دیا؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

مقابلہ حسن میں ایک روبوٹ کو جج بنادیا، اس نے کس طرح کی خواتین کو حسین ترین ...
مقابلہ حسن میں ایک روبوٹ کو جج بنادیا، اس نے کس طرح کی خواتین کو حسین ترین قرار دے دیا؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

  


لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) ایشیائی مرد اکثرگوری خواتین کو پسند کرتے ہیں لیکن گزشتہ دنوں ایک مقابلہ حسن میں مصنوعی ذہانت کے حامل ایک روبوٹ کو جج بنا دیا گیا تو اس نے بھی کچھ ایسی خواتین کو حسین ترین قرار دے دیا کہ آپ بھی سن کر حیران رہ جائیں گے۔ برطانوی اخبار دی گارڈین کی رپورٹ کے مطابق روبوٹ بنانے والے ماہرین نے دنیا بھر سے خواتین کو اس مقابلے میں شریک ہونے کے لیے اپنی تصاویر بھیجنے کو کہا۔ بالآخر 100ممالک سے 6ہزار خواتین کی تصاویر انہیں موصول ہوئیں جنہیں مقابلے میں شامل کر لیا گیا۔ ماہرین توقع کر رہے تھے کہ روبوٹ چہرے کے خدوخال کے توازن اور جھریوں جیسے واضح پہلوﺅں کو مدنظر رکھتے ہوئے خوبصورت خواتین کا انتخاب کریں گے لیکن جب نتائج سامنے آئے تو وہ یہ دیکھ کر حیران رہ گئے کہ روبوٹ نے بھی مردوں کی طرح گوری چٹی خواتین ہی کو خوبصورت ترین قرار دے دیا تھا۔

پرانی انار کلی میں ناچنے والی لڑکیوں کے بارے میں افسوسناک خبرآگئی ، ویڈیو بھی ہٹادی گئی

رپورٹ کے مطابق روبوٹ نے ان 6ہزار میں سے 44خواتین کو خوبصورت ترین قرار دیا جن میں سب کی سب مغربی ممالک کی گوری عورتیں تھیں۔ ان میں چند ایک ہی ایشیائی خواتین شامل ہو سکیں۔وہ بھی ایسی تھیں جن کی رنگت گوری تھی۔ صرف ایک ایسی خاتون کو روبوٹ نے ان 44خواتین میں شامل کیا جو سانولی رنگت کی حامل تھی۔ماہرین کا کہنا تھا کہ ”ان چھ ہزار خواتین میں زیادہ تر سفید فام ہی تھیں لیکن بھارت اور افریقہ سے بھی بہت زیادہ تعداد میں خواتین نے تصاویر بھیجی تھیں لیکن روبوٹ نے انہیں منتخب نہیں کیا۔ اس روبوٹ کے سسٹم نے پیچیدہ الوگرتھم کے ذریعے یہ کام سرانجام دیا جسے اب نسل پرستی پر مبنی قرار دیا جا ررہا ہے۔ واضح رہے کہ اس سے قبل معروف ٹیکنالوجی کمپنی مائیکروسافٹ نے بھی سوشل میڈیا کے اکاﺅنٹ چلانے کے لیے ایک روبوٹ تیار کیا تھا جس نے ٹوئٹر پر نسل پرستانہ ٹویٹس کرنے شروع کر دیئے تھے۔ اس روبوٹ نے اپنی ٹویٹس میں یہودیوں کا قتل عام کرنے والے جرمن نازیوں کی تعریف کی تھی جس پر دنیا میں ہنگامہ برپا ہو گیا تھا۔ ایک بار پھر مقابلہ حسن کا جج بننے والے اس روبوٹ کے تخلیق کاروں کو بھی ایسی ہی تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس