ترکی نے شام کا شہر داعش سے خالی کروانے کے بعد فوری ایسی چیز وہاں پہنچادی جو شہریوں نے ایک عرصے سے دیکھی بھی نہ تھی، ہر کسی کا دل جیت لیا، یہ کھانے پینے کا سامان نہیں تھا بلکہ۔۔۔

ترکی نے شام کا شہر داعش سے خالی کروانے کے بعد فوری ایسی چیز وہاں پہنچادی جو ...
ترکی نے شام کا شہر داعش سے خالی کروانے کے بعد فوری ایسی چیز وہاں پہنچادی جو شہریوں نے ایک عرصے سے دیکھی بھی نہ تھی، ہر کسی کا دل جیت لیا، یہ کھانے پینے کا سامان نہیں تھا بلکہ۔۔۔

  

دمشق (مانیٹرنگ ڈیسک) چند ہفتے قبل تک شمالی شام کا شہر جرابلس دنیا میں جہنم کا نقشہ پیش کررہا تھا، جہاں داعش کے جنگجو دندنارہے تھے اور موت کے خوف میں مبتلا شہری اپنے گھروں کو چھوڑ کر جاچکے تھے۔ اس علاقے میں ترکی نے محض دو ہفتے قبل اپنی افواج داخل کیں اور اب صورتحال یہ ہے کہ داعش کا صفایا ہوگیا ہے اور اپنے گھروں کو چھوڑ کر جانے والے شہری واپس لوٹ رہے ہیں۔ شام کے یہ مظلوم باشندے جب اپنے گھروں کو واپس لوٹے تو یہ دیکھ کر خوشی سے نہال ہو گئے کہ ترکی نے ناصرف ان کے علاقے کو داعش سے آزاد کروادیا تھا بلکہ یہاں بجلی کی ایک لائن بھی پہنچائی جارہی تھی، جو زیر زمین کیبل کی صورت میں ترک سرحد کی دوسری جانب سے شروع ہوکر جرابلس شہر تک آرہی تھی ۔

’روس کے پاس دنیا کا سب سے طاقتور ترین ایٹمی ہتھیار!‘ ایسا انکشاف منظر عام پر کہ امریکیوں کو دن میں تارے نظر آگئے

ترک حکام کا کہنا ہے کہ بجلی کی زیر زمین کیبل کل تین کلومیٹر پر مشتمل ہے جس کا ایک کلومیٹر پر مشتمل حصہ ترکی میں جبکہ دو کلومیٹر حصہ شام کی سرحد سے لے کر جرابلس تک پھیلا ہوا ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ جرابلس کو داعش سے پاک کرنے کے بعد اس علاقے کے اصل باشندے اپنے گھروں کو لوٹ رہے ہیں اور ترکی کی کوشش ہے کہ ان کی زندگی کو دوبارہ بحال کیا جاسکے۔ بجلی کی فراہمی اسی کوشش کا حصہ ہے کیونکہ زندگی کی بحالی کے لئے یہ بنیادی ترین ضرورت ہے۔ اہم بات یہ ہے کہ ترکی نے شام کے شمالی حصے میں ناصرف امن فراہم کردیا ہے بلکہ بجلی جیسی بنیادی ضرورت بھی فراہم کردی ہے، اور وہ بھی مفت۔ ترک حکام کا کہنا ہے کہ مفت بجلی کی فراہمی بلا تفریق جرابلس کے تمام شہریوں کے لئے جاری رکھی جائے گی جبکہ ان کی بحالی اور بہبود کے لئے دیگر ہر ممکن قدم بھی اٹھایا جائے گا۔

مزید :

بین الاقوامی -