مافیا کیخلاف ایکشن نہ لیا گیا تو مائع گیس کابحران پیدا ہوجائیگا،عرفان کھوکھر

مافیا کیخلاف ایکشن نہ لیا گیا تو مائع گیس کابحران پیدا ہوجائیگا،عرفان کھوکھر

  

لاہور(خبرنگار) ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن پاکستان کے چےئرمین عرفان کھوکھر نے کہا ہے کہ ایل پی جی کے طاقتور ما فیانے ایل پی جی کی درآمد پر ٹیکس لگوا کر گیس کی امپورٹ کو فیزیبل نہ ہونے دیا جسکی وجہ سے ایل پی جی امپورٹر نے گیس کی درآمد کم کر دی ۔ ایل پی جی کی درآمد میں کمی کے نتیجہ میں آج لوکل اور امپورٹڈ گیس کی قیمت میں 20روپے فی کلو کا فرق ہے۔ ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیوں نے اوگرا کے نوٹیفکیشن کے بغیر آٹھ روز میں چوتھی بار ایل پی جی کی قیمتوں میں بلاجواز اضافہ کر کے اوگرا قانون کی دھجیاں بکھیر دی ہیں۔ چند عناصر حکومت کی بدنامی کا باعث بن رہیں ہیں۔اگر وزیر اعظم نے گیس کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کا نوٹس لیکر زمہ داروں کو کیفر کردار تک نہ پہنچایا تو آئندہ سردیوں میں ایل پی جی کی قیمتیں تاریخ کی بلند رترین سطح پر پہنچ جائیں گی۔ ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیوں کے ہاتھوں ڈسٹری بیوٹرز مہنگی گیس لینے پر مجبور ہے۔ عرفان کھوکھر نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف، وزیر پیٹرولیم شاہد خاقان عباسی، وزارت پیٹرولیم، چےئرپرسن اوگرا سے اپیل ہے کہ ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیوں کا ناجائز قیمتوں میں بلاجواز اضافہ کرنے پر سخت سے سخت نوٹس لیا جائے۔ اگر فوری ایکشن نہ لیا گیا تو مائع گیس پے در پے مہنگی ہوتی جائے گی اور سردیوں میں مائع گیس کا بحران پیدا ہو جائے گا، جس کے باعث گھریلو صارفین سمیت کمرشل سیکٹر اور مائل گیس پر چلنے والی ٹرانسپورٹ کو گیس نہیں مل سکے گی اس سے ٹرانسپورٹ کے کرائے بھی بڑھیں گے۔ دوسری جانب ایل پی جی کی قیمتوں میں اضافہ ہونے پر ایل پی جی کے گھریلو سلنڈر میں 90 روپے فی کلو اضافہ ہو گیا ہے۔

عرفان کھوکھر

مزید :

صفحہ آخر -