شمالی کوریا کا پانچویں اور اب تک کے سب سے بڑے کامیاب جوہری تجربے کا دعوٰی

شمالی کوریا کا پانچویں اور اب تک کے سب سے بڑے کامیاب جوہری تجربے کا دعوٰی

  

پیانگ گانگ/سیول /ٹوکیو(اے این این) شمالی کوریا نے پانچویں اور اب تک کے سب سے بڑے کامیاب جوہری تجربے کا دعویٰ کیاہے ،دھماکے کے بعد شمالی کوریا کے پونگی ری نیوکلیئر ٹیسٹ سائٹ کے قریب 5.3 شدت کا زلزلہ ،ادھرجاپان اورجنوبی کوریا نے شمالی کوریاکے جوہری تجربے پرشدیدردعمل کااظہارکرتے ہوئے اسے خطے کے امن و استحکام کے لئے نقصان دہ قراردیا۔ فرانسیسی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق شمالی کوریا کے سرکاری ٹی وی پر اعلان کیا گیا ہمارے جوہری سائنسدانوں نے ملک کے شمال میں واقع نیوکلیئر ٹیسٹ سائٹ پر جوہری تجربہ کیا اور ہماری پارٹی جوہری سائنسدانوں کو کامیاب ایٹمی دھماکا کرنے پر مبارکباد دیتی ہے ۔ اس سے قبل جنوبی کوریا کی صدر پارک گیؤن ہی نے دعویٰ کیا تھا کہ شمالی کوریا نے پانچواں اور اب تک کا سب سے بڑا ایٹمی دھماکا کیا ہے۔ جنوبی کورین صدر نے اسے تباہی کا ایک اقدام قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی تھی اور کہا تھا کہ اس سے شمالی کوریا دنیا میں مزید تنہا ہوجائے گا، جسے اپنے جوہری پیغام اور بیلسٹک میزائل تجربوں کی وجہ سے پہلے ہی عالمی تنقید اور اقوام متحدہ کی جانب سے پابندیوں کا سامنا ہے۔ جنوبی کوریا کی صدر پارک نے شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ان کے اقدامات کی شدید مذمت کی جنھوں نے رواں برس جنوری میں متعدد بیلسٹک اور نیوکلیئر تجربات کیے تھے۔ انہوں نے خبردارکیاکہ کم جونگ ان اپنے دور اقتدار میں صرف اس ملک کو پابندیاں اور تنہائی دیں گے اور اس طرح کے اشتعال انگیز اقدامات خود اپنے آپ کو تباہ کرنے کے مترادف ہیں ۔انھوں نے کہا کہ ہم تمام اقدامات کے ذریعے شمالی کوریا پر دبا برقرار رکھنے کی کوشش کریں گے، جن میں عالمی برادری اور اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کے تعاون سے شمالی کوریا پر سخت پابندیاں عائد کرنا بھی شامل ہے ۔ جنوبی کوریا کے ماہرین کے مطابق ایٹمی دھماکے کے بعد شمالی کوریا کے پونگی ری نیوکلیئر ٹیسٹ سائٹ کے قریب 5.3 شدت کا زلزلہ آیا۔ واضح رہے کہ اس سے قبل 2013 میں شمالی کوریا نے تیسرا ایٹمی دھماکا کیا تھا، جسے اب تک کا سب سے زیادہ طاقت ور دھماکا قرار دیا جارہا تھا۔ علاقائی ارضیاتی نگرانی ایجنسیوں نے اس تجربے کے بعد بھی 4.9 اور 5.1 کے درمیان شدت کا زلزلہ ریکارڈ کیا تھا جس کا مرکز شمالی پونگی ری جوہری سائٹ تھا۔ جنوبی کوریا کی میٹرولوجیکل ایجنسی کے کم نیم ووک نے کہاکہ شمالی کوریا کی جانب سے کیا گیا 10 کلوٹون کا تیسرا دھماکا، چوتھے ایٹمی دھماکے کے مقابلے میں دگنا تھا جبکہ یہ جاپانی شہر ہیروشیما پر گرائے گئے 15 کلوٹون کے بم سے کم تھا ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -