پاکستان اور بھارت کشیدگی ختم کریں ،نہیں چاہتے صورتحال پھر کسی واقعہ کے رونما ہونے کی طرف جائے :امریکہ

پاکستان اور بھارت کشیدگی ختم کریں ،نہیں چاہتے صورتحال پھر کسی واقعہ کے ...

واشنگٹن(اے این این)امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان مارک سی ٹونرنے پاک امریکہ میں کشیدگی کا تاثریکسرمسترد کرتے ہوئے کہاہے کہ وزیرخارجہ جان کیری بھارت اوربنگلہ دیش کے دورے کے دوران پاکستان کونظراندازکیانہ ان کے ا س دورے کو پاک امریکا تعلقات سے جوڑا جائے، کیری حال ہی میں پاکستان گئے تھے اوران کاپاکستانی قیادت سے رابطہ رہتاہے ،دہشت گردی سمیت کئی امورپر پاکستان کیساتھ مل کرکام کررہے ہیں جبکہ دہشت گردی کے خلاف پاکستان کے اقدامات نظر آرہے ہیں ،امریکہ پاکستان اوربھارت کے درمیان بھی کشیدگی نہیں چاہتا، دونوں ملکوں کی حکومتوں کوچاہیے کہ مضبوط ،خوشگوار اور تعمیری تعلقات برقرار رکھیں ،نہیں چاہتے کہ ایسی صورتحال پیدا ہو کہ جس سے پھرکسی قسم کا کوئی واقعہ رونماہو ۔گزشتہ روزمعمول کی پریس بریفنگ میں مارک ٹونرنے کہاکہ وہ اس بات سے اتفاق نہیں کرتے کہ پاکستان اور امریکہ کے تعلقات اس وقت انتہائی کم ترین سطح پر ہیں پاکستان کے ساتھ ہمارے تعلقات مضبوط ہیں اور یہ تعلقات نہ صرف دونوں ملکوں بلکہ پورے خطے کے مفاد میں ہیں تاہم بعض اوقات تعلقات میں کچھ مسائل آتے ہیں لیکن مجموعی طور پر انسداد دہشت گردی سمیت کئی معاملات پر ہمارے تعلقات مضبوط ہیں دہشت گردی کے خاتمے کیلئے ہم پاکستان کے ساتھ مل کرکام کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ امریکی وزیرخارجہ جان کیری نے حال ہی میں تذویراتی اور تجارتیمذاکرات کے سلسلے میں بھارت کادورہ کیا۔بھارت دنیاکی سب سے بڑی جمہوریت ہے اوراس میں کوئی دورائے نہیں کہ ہم بھارت کے ساتھ مضبوط اور مستحکم تعلقات چاہتے ہیں اورتعلقات مضبوط بنا رہے ہیں اسی طرح ہم پاکستان کے ساتھ بھی مضبوط تعلقات چاہتے ہیں جبکہ جان کیری نے موقع کوبروئے کارلاتے ہوئے بنگلہ دیش کادورہ بھی کیااورمیرے خیال میں یہ ان کا بنگلہ دیش کاپہلادورہ تھاچنانچہ جان کیری کے پاکستان نہ جانے کو پاک امریکا تعلقات سے نہ جوڑاجائے کیری حال ہی میں پاکستان گئے تھے اورپاکستانی قیادت سے بات چیت کرتے رہتے ہیں ۔ترجمان نے کہاکہ ہم پاکستان کی حکومت پر زور دے رہے ہیں کہ وہ دہشت گرد تنظیموں اور ان کے محفوظ ٹھکانوں کے ساتھ سخت کاروائی کرے جو خطے کے دوسرے ملکوں کیلئے خطرہ ہے اس حوالے سے ہمارا موقف واضح ہے اور اس سلسلے میں پاکستان کے اقدامات نظرآرہے ہیں تاہم مزید اقدامات کی ضرورت ہے ۔ امریکہ کے پاکستان اور بھارت کے درمیان ثالث کاکرداراداکرنے سے متعلق سوال پرمارک ٹونرنے کہاکہ امریکہ ، پاکستان اور بھارت کے درمیان مضبوط تعلقات کی حوصلہ افزائی کرتا ہے اور یہ خطے کے سیکورٹی مفاد میں ہے کہ دونوں ہمسایہ ملک کشیدگی ختم اور مذاکرات کا آغاز کریں ہم نہیں چاہتے کہ دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہو اور ایسی صورتحال پیدا ہو کہ جس سے دوبارہ کسی قسم کا کوئی واقعہ پیش آئے۔انہوں نے کہاکہ دونوں ملکوں کی حکومتوں کیلئے یہ ضروری ہے کہ وہ مضبوط، خوشگوار اور تعمیری تعلقات برقرار رکھیں ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر