کاروباری اداروں میں شمسی توانائی کی حوصلہ افزائی کیلئے سیلز آپشن

کاروباری اداروں میں شمسی توانائی کی حوصلہ افزائی کیلئے سیلز آپشن

کراچی(اسٹاف رپورٹر)توانائی کے اخراجات کمپنیوں کے مالی مفادات کو براہ راست متاثر کررہے ہیں جبکہ انتہائی طلب کے اوقات میں 8ہزار میگاواٹ کے شارٹ فال سے بھی اس کے اثرات میں کئی گنا اضافہ ہورہا ہے ۔پاکستان ایسے محل وقوع پر واقع ہے جہاں سورج کی روشنی انتہائی وافر مقدار میں موجودہے اور سولر پلانٹ کی تنصیب سے انتہائی معمولی مینٹیننس اخراجات کے بدلے 25برس کیلئے مفت توانائی حاصل کی جاسکتی ہے ۔ایسے کاروباری مالکان جو کہ اپ فرنٹ لاگت سے بچنے اور رسک کے عنصر کو کم کرنے کے خواہاں ہیں ان کیلئے ریون انرجی کی جانب سے توانائی کی فروخت کاایک انتہائی زبردست تصور پیش کیا گیا ہے ،توانائی کی فروخت ایک ایسا مالیاتی معاہدہ ہے جہاں ڈیولپر صارف کی پراپرٹی پر زیرو یا انتہائی کم اپ فرنٹ لاگت کے عوض منصوبے کی ڈیزائننگ ،فنانسنگ اور تنصیب کا انتظام کرتا ہے ،معاہدے کے مطابق اس منصوبے سے پیدا ہونے والی بجلی صارف کو ایک طے شدہ نرخ پر فروخت کی جاتی ہے جو کہ عام طور پر مقامی یوٹیلیٹی نرخ سے کم ہوتی ہے ،مالیاتی مدت کے خاتمے کے بعد صارف اس سہولت کو خریدنے یا پھر معاہدے کی مدت میں توسیع کا مجاذ ہوتا ہے ۔ریون انرجی لمیٹڈ کے سی ای او انعام الرحمن کا کہنا ہے کہ انرجی سیل ماڈل ایک تھرڈ پارٹی اوونر شپ ماڈل ہے جو کہ امریکا اور دیگر ترقی یافتہ مارکیٹس میں انتہائی خوش اسلوبی سے رائج ہے ،ایسے ماڈل نئے کاروباری اداروں کیلئے انتہائی بہترین ہیں ،پاکستان میں شمسی توانائی سے بجلی حاصل کرنے کے انتہائی نادر مواقع موجود ہیں اور اس ضمن میں ایسے فنانسنگ میکانزم سے استفادہ کیا جاسکتا ہے ۔کراچی میں شاہراہ فیصل پر IBL بلڈنگ میں نصب ریون انسٹالیشن کمپنی کے انرجی سیل ایگریمنٹ کا ایک حصہ ہے ،ایسے معاہدوں سے درمیانے اور بڑے درجے کے کاروباروں کو گرین انرجی پر منتقل کیا جاسکتا ہے ،ریون انرجی داؤد ہرکولیس کارپوریشن کا ایک حصہ ہے جو کہ پاکستان میں نجی شعبے میں بجلی پیدا کرنے والا سب سے بڑا ادارہ ہے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر