صوبہ سرائیکستان کی تحریک کو جنتا دبایا جائیگا اتنی بھرے گی، عاشق بزدار

صوبہ سرائیکستان کی تحریک کو جنتا دبایا جائیگا اتنی بھرے گی، عاشق بزدار

  

ملتان (سٹی رپورٹر) وسیب کے حقوق اور صوبہ سرائیکستان کی جدوجہد کو ’’ را ‘‘ کی تحریک کا نام دینے والے خود غدار ہیں۔ صوبے کی تحریک کو جتنا دبایا جائے گا ، اتنی ابھرے گی ۔ ان خیالات کا اظہار سرائیکستان عوامی اتحاد کے رہنماؤں عاشق بزدار ، ظہور دھریجہ ، ابراہیم خان پتافی ، عنایت اللہ مشرقی اور عبدالستار تھہیم نے پریس کانفرنس سے(بقیہ نمبر28صفحہ7پر )

خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ منظم سازش کے تحت حکمرانوں کے ایجنٹ سرائیکی تحریک کو بدنام کرنے کی بھونڈی کوشش کر رہے ہیں لیکن صوبے کی تحریک استحکام پاکستان کی تحریک ہے اور صادق آباد دے لیکر ڈیرہ اسماعیل خان تک پوری قوم صوبہ سرائیکستان کے قیام پر متحد ہے۔ سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ اگر کوئی ’’ را ‘‘ کا ایجنٹ ہے تو وہ آئین کے مطابق پاکستان کا غدار ہے اور غدار کی سزا موت ہے ، اسے ضرور ملنی چاہئے الزام لگانے والے ثبوت فراہم کریں ورنہ ان کو غدار اور را کا ایجنٹ سمجھا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ تخت لاہور کے ایک ایجنٹ اسلم اکرام زئی سرائیکی خطے کے مظلوموں کی مقدس تحریک کو طعنہ دیا ہے کہ وہ اسمبلی ممبر منتخب نہیں ہو تے ، ہم واشگاف لفظوں میں کہتے ہیں کہ یہ طعنہ بانئ پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح کو بھی ملتا تھا کہ 1906ء میں مسلم لیگ وجود میں آئی ، لیکن ووٹ ان کو بھی نہیں ملتے تھے ۔ آج بھی مقبوضہ کشمیر میں حریت پسندوں کو ووٹ نہیں ملتے ۔اس کا مطلب یہ نہیں کہ کشمیر کی تحریک کاغذی یا مصنوعی ہے۔ سرائیکی رہنماؤں نے سوال کیا کہ کیا وجوہات تھیں کہ 1946ء میں یعنی قیام پاکستان سے ایک سال قبل پنجاب کا وزیر اعلیٰ یونینسٹ پارٹی کا خضر حیات ٹوانہ تھا؟ انہوں نے کہا کہ سرائیکستان کے نام پر تنقید کرنے والے خود بتائیں کہ بلوچستان ، بلتستان اور وزیرستان کیا چیز ہے ؟ انہوں نے کہا کہ سرائیکی وسیب کے لوگ بالکل اسی طرح کا صوبہ مانگتے ہیں ، جیسے کہ دوسرے صوبے ہیں ، ۔ سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ پاکستان کو پنجابستان نہ بنایا جائے ، سب کو برابر حقوق دیئے جائیں ۔ اس موقع پر بلاول ابراہیم خان پتافی ، فیصل ابراہیم ، حاتم نائچ ، منور خان بزدار ، استاد سجاد رسول ، اعجاز گولڈن ، ظفر مسکین، زبیر دھریجہ، اجمل دھریجہ اور دوسرے موجود تھے ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -