ناقص خوراک کیس ،میرا بھائی بھی سفارشی ہوگا تو جیل بھیج دوں گا،نیشنل اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کے خلاف کارروائی کا حکم دیتے ہوئے جسٹس ثاقب کے ریمارکس

ناقص خوراک کیس ،میرا بھائی بھی سفارشی ہوگا تو جیل بھیج دوں گا،نیشنل اور ملٹی ...
ناقص خوراک کیس ،میرا بھائی بھی سفارشی ہوگا تو جیل بھیج دوں گا،نیشنل اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کے خلاف کارروائی کا حکم دیتے ہوئے جسٹس ثاقب کے ریمارکس

  


لاہور(نامہ نگار خصوصی )سپریم کورٹ نے پنجاب فوڈ اتھارٹی کو مضر صحت دودھ اوردیگر مشروبات تیار کرنے میں ملوث نیشنل اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کے خلاف بلاامتیاز کارروائی کا حکم جاری کردیا،اس موقع پر مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ میرا بھائی بھی ایسے ملزموں کا سفارشی ہوگا تو اسے جیل بھیج دوں گا۔ بچوں کی صحت سے کھیلنے والوں کو چھوڑا نہیں جائے گا۔سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے ناقص خوراک سے متعلق ازخود نوٹس کیس کی سماعت شروع کی توپنجاب فوڈ اتھارٹی کی ڈائریکٹر آپریشنز عائشہ ممتاز، ایڈووکیٹ جنرل شکیل الرحمن، اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل انوار حسین سمیت متعلقہ افسرعدالت میں پیش ہوئے، عائشہ ممتاز نے عدالت کو آگاہ کیا کہ مضر صحت دودھ، مشروب، پانی اور ناقص خوراک بنانے والی کمپنیوں کے خلاف بھرپور کریک ڈاﺅن کیا جا رہا ہے، چند دن قبل ہی مضر صحت دودھ بنانے والی پریمیئر ملک کمپنی اور ملیک کمپنی کے خلاف کارروائی کی ہے، دونوں کمپنیاں مضر صحت اور جان لیوا کیمیکل کے ذریعے ڈبہ پیک خشک اور مائع دودھ بنا رہی تھیں، ان دونوں کمپنیوں نے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کر رکھا ہے، دونوں کمپنیوں کے کے نمائندہ افسروں نے عدالت کو بتایا کہ دودھ کی تیاری میں کوئی مضر صحت کیمکل استعمال نہیں کیا جاتا، دودھ بنانے کیلئے جو اجزاءملٹی نیشنل کمپنیاں استعمال کر رہی ہیں، وہی اجزاءہم بھی استعمال کر رہے ہیں، عدالت نے پنجاب فوڈ اتھارٹی کی طرف سے پیش کردہ ریکارڈ اور تصاویر کا جائزہ لینے کے بعد دونوں کمپنیوں کا موقف مسترد کر دیا، سپریم کورٹ نے ریمارکس دیئے کہ عدالت ملک میں کاروبار کرنیوالوں کے حوالے سے کوئی خوف پیدا نہیں کرنا چاہتی لیکن ناقص غذا بنانے والوں کو نہیں چھوڑیں گے، جسٹس میاں ثاقب نثار نے مزید ریمارکس دیئے کہ بچوں کی صحت اور مستقل کے ساتھ کھیلنے والے قابل معافی نہیں ہیں، پریمیئر کمپنی کی طرف سے شہزاد عطاءالہی ایڈووکیٹ نے دلائل دینے کی کوشش کی تو عدالت نے انہیں منع کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ یہ مفاد عامہ کا کیس ہے، مناسب ہوگا کہ اس کیس میں وہ مضر صحت دودھ بنانے والوں کا دفاع یا سفارش نہ کریں، جسٹس میاں ثاقب نثار نے مزید ریمارکس دیئے کہ اگر ان کا سگا بھائی بھی ایسے گنہگاروں کا سفارشی ہو تو وہ اپنے بھائی کو بھی کمرہ عدالت سے ہی گرفتار کرا کر جیل بھیج دیں گے اور اس کی بے عزتی الگ سے کریں گے۔

قربانی کا جانور خریدنا ہے یا عید کے کپڑے، پیسے آج ہی نکلوالیں نہیں تو ...

انہوں نے ریمارکس دیئے کہ یہاں بچوں کی زندگیوں سے کھیلا جا رہا ہے، عدالت کیسے آنکھیں بند کر لے، عدالت نے پنجاب فوڈ اتھارٹی کی عائشہ ممتاز کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ بہت متحرک طریقے سے اپنے فرائض سرانجام دے رہی ہیں، عائشہ ممتاز نے عدالت کو بتایا کہ شہریوں کو حفظان صحت کے اصولوں کے مطابق خوراک کی فراہمی کے لئے محکمہ خوراک قانون کے تحت مضر صحت اشیاءفروخت کرنے والوں کے خلاف کاروائیاں جاری رکھے ہوئے ہے۔خوراک کا معیار جانچنے کے لئے لاہور میں دو لیبارٹریاں موجود ہیں جبکہ 10کروڑ روپے کی لاگت سے جدید سہولیات کی حامل دو مزید لیباٹریاں 2018 ءسے قبل مکمل ہوجائیں گی ۔جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا کہ سپریم کورٹ مکمل طور پر عائشہ ممتاز کے ساتھ کھڑی ہے، پنجاب فوڈ اتھارٹی مضر صحت دودھ ،مشروبات اور دیگر اشیاءخورد ونوش تیار کرنے والی نیشنل اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کے خلاف بھرپور کارروائی کرے لیکن یہ شکایت نہیں آنی چاہیے کہ کسی کے ساتھ امتیازی سلوک برتا گیا، عدالت نے فوڈ اتھارٹی کو حکم دیا کہ پریمیئر ملک کمپنی اور ملیک کمپنی کے خلاف کارروئی کو جلد مکمل کیا جائے، سپریم کورٹ نے لاہور ہائیکورٹ کو بھی ہدایت کی کہ دونوں کمپنیوں سے متعلق درخواستوں ایک ماہ میں فیصلہ کیا جائے۔ سپریم کورٹ نے ازخود نوٹس کیس پر مزید سماعت ایک ہفتے تک ملتوی کر دی ۔

مزید : لاہور