ہوٹلز کے کمپیوٹرز میں ”ہوٹل آئی“ سافٹ ویئر لازم قرار

ہوٹلز کے کمپیوٹرز میں ”ہوٹل آئی“ سافٹ ویئر لازم قرار
ہوٹلز کے کمپیوٹرز میں ”ہوٹل آئی“ سافٹ ویئر لازم قرار

  

لاہور(ویب ڈیسک) جرائم پیشہ عناصر کے گرد گھیرا مزید تنگ کرنے کے لیے لاہور پولیس نے صوبائی دارالحکومت میں تمام ہوٹلز میں “ہوٹل آئی” کے نام سے “سافٹ وئیر” متعارف کروایا ہے جس کے تحت تمام ہوٹلز کی انتظامیہ کو ہدایت کی گئی ہے کہ ہوٹل میں آنے والے ہر فرد کی انٹری ہوٹل آئی سافٹ ویئر میں ہونی چاہیے۔

لاہور پولیس نے اس سافٹ وئیر کے ڈیٹا بیس میں جرائم پیشہ افراد کا ڈیٹا فیڈ کیا ہے جس میں قتل، ڈکیتی، راہزنی، چوری و دیگر جرائم کا ڈیٹا فیڈ کیا گیا ہے۔ اس سافٹ وئیر کے تحت جیسے ہی کوئی ریکارڈ یافتہ مجرم یا دیگر تخریب کار ہوٹل میں آئے گا تو آفس روم میں بیٹھے آپریٹرز کے سامنے تمام معلومات آجائیں گی اور پولیس فوری طور پر ہوٹل انتظامیہ کو مطلع کرکے ملزم کو گرفتار کرلے گی۔

روزنامہ پاکستان کی خبریں اپنے ای میل آئی ڈی پر حاصل کرنے اور سبسکرپشن کیلئے یہاں کلک کریں

روزنامہ ایکسپریس کے مطابق ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف کا کہنا تھا کہ لاہور پولیس کے ہوٹل آئی سافٹ وئیر بنانے کے بعد نہ صرف ہوٹل انتظامیہ احساس تحفظ محسوس کرتی ہے بلکہ پولیس بھی اپنا ڈیٹا آسانی سے مرتب کر سکتی ہے۔لاہور پولیس نے یکم جنوری 2016ءکو یہ سافٹ یئر متعارف کروایا تھا اور اب تک اس سافٹ ویئر کے طور پر لاہور کی تمام ڈویژنز کے ہوٹلوں میں 1لاکھ 94 ہزار 104 افراد کی انٹری کی گئی جن میں 7472 افراد کا تعلق بیرون ملک سے تھا۔ 186632 افراد ملکی ہیں جبکہ 453 کا ریکارڈ کرمنل ریکارڈ آفس میں پایا گیا جن میں 50 سے زائد افراد کو گرفتار کرلیا گیا۔ لاہور کے ہر ہوٹل کی انتظامیہ یہ سافٹ ویئر انسٹال کرکے ہر آنے والے فرد کا ڈیٹا انٹر کرنے کی پابند ہے اور خلاف ورزی پر قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

مزید :

لاہور -