الطاف حسین کیخلاف حکومت پاکستان کے ریفرنس پر برطانیہ کاجواب آگیا، 22اگست کے واقعات کی مذمت، ریفرنس میٹروپولیٹن پولیس کوبھیج دیاگیا

الطاف حسین کیخلاف حکومت پاکستان کے ریفرنس پر برطانیہ کاجواب آگیا، 22اگست کے ...
الطاف حسین کیخلاف حکومت پاکستان کے ریفرنس پر برطانیہ کاجواب آگیا، 22اگست کے واقعات کی مذمت، ریفرنس میٹروپولیٹن پولیس کوبھیج دیاگیا

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) حکومت پاکستان کے 22اگست کو ایم کیوایم کے بانی کی تقریر ، پاکستان مخالف نعروں اور میڈیا کے دفاتر پر حملوں سے متعلق ریفرنس پر حکومت برطانیہ کا باضابطہ جواب آگیاہے جس میں برطانوی ہوم آفس نے کراچی میں ہونیوالے تشدد اورناخوشگوار واقعات کی مذمت کی اور واضح کیا کہ برطانوی پولیس مکمل طورپر آزاد ہے اور شواہد کا نہایت توجہ سے تجزیہ کرے گی ۔

وزارت داخلہ کے ترجمان کے مطابق برطانوی ہوم آفس کے اعلیٰ اہلکار کی جانب سے پاکستان کو بھیجا گیا جواب موصول ہوگیا ہے جس میں بتایاگیا ہے کہ حکومت پاکستان کا ریفرنس میٹروپولیٹن پولیس کو بھیج دیاگیا ہے ، میٹروپولیٹن پولیس آزاد ہے اورقانون کے مطابق  تمام شواہد کا تجزیہ کرے گی ، اگر ضرورت پڑی تو دوبارہ حکومت پاکستان سے رابطہ کیاجائے گا۔

نجی ٹی وی چینل کے ذرائع کے مطابق حکومت پاکستان کی طرف سے بھیجے گئے ریفرنس میں شواہد کے طورپر پاکستان میں درج ہونیوالے مقدمے کی کاپی ، ٹی وی چینلز پر حملے اور الطاف حسین کی تقریراور فوری طورپر کارکنان کے ردعمل کی ویڈیو ز بھیجی گئی تھیں ۔

’نامعلوم‘افراد لندن پہنچ گئے،مرکزی دفتر کے باہر لگی فہرست میں ایم کیوایم کا نام ہی’غائب‘کر دیا

یادرہے کہ 22اگست کو الطاف حسین نے کراچی میں پریس کلب کے سامنے دھرنے کے شرکاءسے ٹیلی فونک خطاب کیاتھا جس میں پاکستان مخالف نعرے بھی لگائے گئے تھے اور الطاف حسین کا رابطہ ختم ہوتے ہی کارکنان نے میڈیا دفاتر پردھاوا بول دیاتھا جس کے بعد ایم کیوایم نے الطاف حسین سے رابطہ ختم کرنے اور ایم کیوایم پاکستان اور لندن کوالگ الگ کرنے کا اعلان کردیاگیاتھا۔

ٹی وی چینلز پر حملے کے بعد ایم کیوایم کے غنڈوں کا دراصل کیامنصوبہ تھا، رینجرز موقع پر کیوں نہیں پہنچی؟ حٰیران کن انکشاف منظرعام پر

مزید :

قومی -اہم خبریں -