’اس معاملے میں تم ٹانگ نہ اڑاﺅ ورنہ۔۔۔‘ چین نے امریکہ کو واضح وارننگ دے دی

’اس معاملے میں تم ٹانگ نہ اڑاﺅ ورنہ۔۔۔‘ چین نے امریکہ کو واضح وارننگ دے دی
’اس معاملے میں تم ٹانگ نہ اڑاﺅ ورنہ۔۔۔‘ چین نے امریکہ کو واضح وارننگ دے دی

  


لاﺅس (نیوز ڈیسک) چین کی ہمسائیگی میں واقع تائیوان، ویتنام، فلپائن اور انڈونیشیا جیسے ممالک اس کے ساتھ بحیرہ جنوبی چین کے تنازع میں الجھے ہوئے ہیں لیکن امریکہ سات سمندر پار سے آکر اس مسئلے میں ٹانگ اڑانے کی کوشش کررہا ہے، جس پر چین نے اسے واضح الفاظ میں کہہ دیا ہے کہ ”تم اپنے کام سے کام رکھو“ اور یہ بھی واضح کردیا ہے کہ اگر ایسا نہ ہوا تو اسے مداخلت سے باز رکھنے کے لئے ضروری بندوبست بھی کیا جائے گا۔

اخبار دی گارڈین کی رپورٹ کے مطابق چینی وزیراعظم لی کیکیانگ کی جانب سے یہ اہم بیان لاﺅس میں منعقد ہونے والی آسیان سربراہی کانفرنس میں سامنے آیا۔ انہوں نے متعدد ممالک کے سربراہان کے ساتھ اہم ترین میٹنگ کے بعد ایک بیان میں کہا کہ چین خطے میں مداخلت کا تدارک کرنے کے لئے دیگر ممالک کے ساتھ مل کر کام کرے گا۔ آسیان ممالک کے راہنماﺅں سے ملاقات کے بعد چینی وزیراعظم کا یہ بھی کہنا تھا کہ چین اس معاملے سے بہت اچھی طرح نمٹے گا۔

’اب ہم یہ کام کرنے کیلئے پوری طرح تیار ہیں‘ ترکی نے سب سے خطرناک اعلان کردیا، داعش کو اب تک کا سب سے بڑا جھٹکا دے دیا

سیاسی تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ یہ الفاظ چین کے مخصوص کوڈ ورڈ ہیں جن کا مطلب یہ ہے کہ بحیرہ جنوبی چین کے علاقے میں کسی بھی ملک اور خصوصاً امریکہ کو مداخلت کی اجازت نہیں دی جائے گی اور اگر مداخلت کی کوشش کی گئی تو اس کا سخت ترین جواب دیا جائے گا۔

چینی وزیراعظم کے بیان سے چند گھنٹے قبل ہی فلپائنی وزارت خارجہ نے کچھ تصاویر اور نقشے جاری کئے تھے جن کے ذریعے یہ ظاہر کرنے کی کوشش کی تھی کہ چین بحیرہ جنوبی چین کے فلپائنی حصے میں نئے مصنوعی جزائر بنانے کی کوشش کررہا ہے۔ فلپائن کے اس بیان کے بعد ہی امریکی صدر کی جانب سے بھی یہ بیان سامنے آیا کہ چین کو بحیرہ جنوبی چین کی خودمختاری کے متعلق عالمی ثالثی عدالت کے فیصلے کو تسلیم کرنا چاہیے۔ تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ چینی وزیراعظم کا سخت بیان فلپائنی وزارت خارجہ کے بیانات اور امریکی صدر کے بیان کا براہ راست جواب ہے۔

مزید : بین الاقوامی