’اب اگر کوئی بھی غیر ملکی یہ کام کرتا نظر آیا تو کفیل کو 20 ہزار ریال جرمانہ کریں گے‘ سعودی حکومت نے واضح اعلان کردیا، خبردار کردیا

’اب اگر کوئی بھی غیر ملکی یہ کام کرتا نظر آیا تو کفیل کو 20 ہزار ریال جرمانہ ...
’اب اگر کوئی بھی غیر ملکی یہ کام کرتا نظر آیا تو کفیل کو 20 ہزار ریال جرمانہ کریں گے‘ سعودی حکومت نے واضح اعلان کردیا، خبردار کردیا

  


ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی حکومت کی جانب سے ٹیلی کام اور موبائل فون سے منسلک کاروباری اداروں اور دکانوں کو پہلے ہی خبردار کیا جاچکا ہے کہ ان کے ہاں کوئی غیرملکی ملازم نہیں ہونا چاہیے، لیکن اب انہیں ایک ایسی وارننگ جاری کردی گئی ہے کہ جس کے بعد موبائل فون کی دکانوں کے مالکان کسی غیر ملکی کو اپنی دکان کے قریب بھی نہیں دیکھنا چاہیں گے۔

عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق وزارت محنت و سماجی ترقی کی جانب سے خبردار کیا گیا ہے کہ کسی بھی ٹیلی کام شاپ پر کوئی غیر ملکی کام کرتا پایا گیا تو دکان کے مالک کو 20 ہزار ریال (تقریباً556000 پاکستانی روپے) جرمانہ کیا جائے گا جبکہ دوبارہ یہی جرم کیا گیا تو جرمانہ دوگنا ہوجائے گا۔

سعودی اوجر کمپنی ملازمین کی تنخواہیں ادا کرنے سے قاصر لیکن کیا آپ کو معلوم ہے سعودی حکومت نے اس کمپنی کے کتنے پیسے دینے ہیں؟ جواب جان کر واقعی آپ کے ہوش اُڑجائیں گے

وزارت کی جانب سے دکانوں پر چھاپے مارنے کا سلسلہ بھی شروع ہوچکا ہے تاکہ غیر ملکی ملازمین کی موجودگی کا سراغ لگایا جاسکے اور انہیں ملازمت پر رکھنے والوں کے خلاف بھی کارروائی کی جاسکے۔ وزارت کی جانب سے عوام سے بھی اپیل کی گئی ہے کہ کسی موبائل فون شاپ پر کسی غیر ملکی کو کام کرتا دیکھیں تو 19911 پر مفت کال کرکے اطلاع دیں تاکہ متعلقہ حکام فوری طور پر کارروائی کرسکیں۔

مزید : عرب دنیا


loading...