رات کے پچھلے پہر نوجوان لڑکی کے منہ سے ایک لفظ ایسا نکل گیا کہ ہمسفر نے غصے میں آکر اس کی انتڑیاں ہی چیر دیں، زندگی چھین لی

رات کے پچھلے پہر نوجوان لڑکی کے منہ سے ایک لفظ ایسا نکل گیا کہ ہمسفر نے غصے ...
رات کے پچھلے پہر نوجوان لڑکی کے منہ سے ایک لفظ ایسا نکل گیا کہ ہمسفر نے غصے میں آکر اس کی انتڑیاں ہی چیر دیں، زندگی چھین لی

  

نیویارک (نیوز ڈیسک) اشرف المخلوقات کہلانے والا انسان بعض اوقات اس قدر وحشی ہوجاتا ہے کہ درندے بھی اس کی وحشت سے پناہ مانگنے لگتے ہیں۔ امریکہ سے تعلق رکھنے والا 24 سالہ نوجوان فدیل لوپیز اس وحشت اور جنونیت کی زندہ مثال ہے جس نے سابقہ شوہر کا نام لینے پرا پنی ہمسفر ماریہ نعمت کا پیٹ پھاڑ ڈالا اور اپنے برہنہ ہاتھوں سے اس کی انتڑیاں کھینچ کر باہر نکال دیں۔

اخبار دی میٹرو کی رپورٹ کے مطابق ایمرجنسی ہیلپ لائن 911 پر ایک کال موصول ہوئی جس میں فیدل لوپیز نامی نوجوان کا کہنا تھا کہ اس کی شریک حیات باتھ روم کے فرش پر پڑی تڑپ رہی ہے اور وہ سانس نہیں لے پارہی۔ یہ شخص بری طرح چیخ اور چلارہا تھا اور ریسکیو اہلکاروں سے فوراً پہنچنے کو کہہ رہا تھا۔ جب ایمرجنسی اہلکار فلوریڈا میں واقع گھر کے اندر پہنچے تو باتھ روم کے فرش پر خون میں لت پت لڑکی کو دیکھ کر ساکت رہ گئے۔ اس کا پیٹ پھٹا ہوا تھا اور انتڑیاں باہر لٹک رہی تھیں اور وہ موت و حیات کی کشمکش میں تھی۔

حاملہ خاتون ایک ایسی جگہ سوگئی کہ موت کی وادی میں پہنچ گئی

فدیل نے ابتدائی طور پر ماریہ کی دہلا دینے والی حالت کے متعلق جھوٹی کہانی گھڑنے کی کوشش کی لیکن بعدازاں یہ بھیانک اعتراف کرلیا کہ قربت کے دوران اس نے سابقہ خاوند کا نام لیا تھا جس پر وحشی ہوکر اس کا پیٹ پھاڑ ڈالا اور اپنے ہاتھوں سے اس کی انتڑیاں باہر کھینچ لیں۔ ملزم نے یہ اعتراف بھی کیا کہ وہ شراب کے نشے میں دھت تھا اور اس کا دماغ جنونی کیفیت میں تھا جس کے باعث وہ وحشی ہوگیا اور ناقابل یقین سفاکانہ جرم کر ڈالا۔ درندہ صفت قاتل کو برووارڈ کاﺅنٹی جیل میں رکھا گیا ہے جبکہ اس کے خلاف قانونی کارروائی جاری ہے۔ توقع کی جارہی ہے کہ اسے سزائے موت سنائی جائے گی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -