برف کے پہاڑ کے نیچے سائنسدانوں کو چھپی ہوئی ایسی گرم چیز مل گئی کہ ہر کوئی قدرت کے کمال پر دنگ رہ گیا

برف کے پہاڑ کے نیچے سائنسدانوں کو چھپی ہوئی ایسی گرم چیز مل گئی کہ ہر کوئی ...
برف کے پہاڑ کے نیچے سائنسدانوں کو چھپی ہوئی ایسی گرم چیز مل گئی کہ ہر کوئی قدرت کے کمال پر دنگ رہ گیا

  

کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) انٹارکٹکا برف پوش خطہ ہے جہاں گرمی کا گزر بھی محال ہے لیکن سائنسدانوں نے دنیا کے اس سرد ترین خطے میں ایک ایسی چیز دریافت کر لی ہے کہ دیکھ کر قدرت کے اس کمال پر دنگ رہ گئے۔ نیشنل پوسٹ کی رپورٹ کے مطابق آسٹریلیا کے سائنسدانوں نے انٹارکٹکا کی برف کے نیچے ایک گرم نخلستان دریافت کیا ہے جو مختلف غاروں کی شکل میں موجود ہے۔ان غاروں میں موسم گرم اور سمندری جانوروں اور پودوں کی بقاءکے لیے سازگار ہے۔

رپورٹ کے مطابق آسٹریلین نیشنل یونیورسٹی کی تحقیق کار مشعیل ایس بیکر کا کہنا ہے کہ ”یہاں سے ڈی این اے کے ایسے نمونے ملے ہیں جن سے ظاہر ہوتا ہے کہ ممکنہ طور پر یہاں جانوروں اور پودوں کی ایسی اقسام پائی جاتی ہیں جن کے متعلق دنیا کو تاحال کچھ معلوم نہیں۔ہوسکتا ہے یہاں جانوروں اور پودوں کی کچھ نئی اقسام موجود ہوں جو باقی زمین پر نہ پائی جاتی ہوں۔“

سائنسدانوں کو پانی میں ڈوبا 1600 سال پرانا شہرمل گیا، یہ تباہ کیسے ہوا تھا؟ جان کر ہر انسان کانپ اٹھے

نیوزی لینڈ کی یونیورسٹی آف ویکیٹو کے پروفیسر اور معاون تحقیق کار چارلس لی کا کہنا تھا کہ ”ہم نے اپنی تحقیق میں جس طرح کی غاریں دریافت کی ہیں، غالب امکان ہے کہ پورے براعظم انٹارکٹکا میں برف کے نیچے ایسی غاروں کا جال بچھا ہو۔ ہم تاحال کچھ نہیں جانتے کہ انٹارکٹکا کے نیچے غاروں کے ایسے کتنے سسٹم موجود ہیں۔ان غاروں میں موسم گرم ہونے کی وجہ شاید زیرزمین آتش فشاں ہیں جو انٹارکٹکا میں بہت زیادہ تعداد میں موجود ہیں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس