اقوام متحدہ کشمیر، فلسطین اور دیگر تنازعات کا حل نکالنے کی ذمہ داری نبھائے ،سید علی گیلانی

اقوام متحدہ کشمیر، فلسطین اور دیگر تنازعات کا حل نکالنے کی ذمہ داری نبھائے ...

سری نگر(کے پی آئی) کل جماعتی حریت کانفرنس گ کے چیرمین سید علی گیلانی نے رونگہیائی مسلمانوں کے ساتھ یکجہتی اور ہمدردی کا اظہار کرنے کے لیے ریاست بھر میں نکالے گئے جلسے جلوسوں میں بھاری عوامی شرکت کو خراج تحسین ادا کرتے ہوئے کہا کہ بحیثیت ایک مظلوم قوم کے ہم رونگہیائی مسلمانوں کے ساتھ ساتھ دنیا کے دوسرے خطوں میں بلالحاظ مذہب وملّت مظلومین کے درد کی کسک محسوس کرتے ہیں۔ بزرگ راہنما نے کہا کہ حکومت برما کی سربراہ نوبل انعام یافتہ آنگ سن سوچی کی طرف سے رونگہیائی مسلمانوں کی وسیع پیمانے پر قتل وغارت اور نقل مکانی جیسے سنگین جنگی جرائم کو کشمیر سے جوڑنے کے بجائے اِسے انسانی نکتہ نگاہ سے پرکھ لینا چاہیے۔ حریت راہنما نے اس امر پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نوبل انعام یافتہ لوگوں کو یہ زیب نہیں دیتا ہے کہ وہ حقِ خودارادیت اور دہشت گردی کو ایک ہی پلڑے میں تول لیں۔ حریت راہنما نے رونگہیائی مسلمانوں کے قتل وغارت کے خلاف لگائے گئے پُرامن احتجاجی مظاہروں پر پولیس انتظامیہ کی طرف سے بے تحاشا لاٹھی چارج اور طاقت کے بے جا استعمال کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مظلومین کے حق میں صدائے احتجاج بلند کرنا ہر انسان کا جمہوری اور اخلاقی حق ہے۔ بزرگ راہنما نے اقوامِ متحدہ اور انسانی حقوق کے عالمی اداروں سے مطالبہ کیا کہ وہ بلالحاظ مذہب وملّت ہر انسان کے مال، جان اور عزت کو تحفظ فراہم کرنے کے لیے اپنے تسلیم شدہ انسانی حقوق کے چارٹر کو لفظ اور رُوح کے ساتھ ایک بار پھر پڑھ لیں اور اس کے آئینے میں مسئلہ کشمیر، فلسطین اور دیگر تنازعات کا حل نکالنے کی ذمہ داری نبھائیں اور دنیا بھر میں انسانی کشت وخون کو روکنے کی جانب اپنا اثرورسوخ استعمال کریں۔ اس دوران میں حیدرپورہ سرینگر میں حریت کانفرنس کے سینئر راہنما ؤں نثار حسین راتھر، مولوی بشیر عرفانی، مولوی بشیر احمد قریشی، معراج الدین ربانی، سید محمد شفیع، امتیاز احمد شاہ، رفیق اویسی، مدثر ندوی اور رمیزراجہ نے ایک عوامی احتجاجی مظاہرے میں شرکت کی جس میں رونگہیائی مسلمانوں کے خلاف قتل وغارت کی شدید ترین الفاظ میں مذمت کی گئی۔

مقررین نے اقوامِ متحدہ کے ذمہ دار ادارے کو ان خونین کارروائیوں پر روک لگانے کا مطالبہ کیا ۔

مزید : عالمی منظر