عقیدہ ختم نبوت، ناموس رسالت کا تحفظ ایمان کی اساس ہے، قاضی محمود الحسن

عقیدہ ختم نبوت، ناموس رسالت کا تحفظ ایمان کی اساس ہے، قاضی محمود الحسن

مظفرآباد(بیورورپورٹ)عقیدہ ختم نبوت اور ناموس رسالت کا تحفظ ایمان کی اساس ہے ۔تحفظ و استحکام پاکستان کیلئے بھرپور قربانیاں دیں گے ۔امریکی صدر کا پالیسی بیان اسلام اور پاکستان کے ساتھ کھلی جنگ ہے ۔ان خیالات کا اظہار آل جموں وکشمیر جمعیت علماء اسلام اتحاد تنظیمات مدارس آزادکشمیر کے سیکرٹری جنرل مولانا قاضی محمود الحسن اشرف نے جہلم ویلی دورہ کے دوران مختلف مقامات پر اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔جامع مسجد امام اعظم ابو حنیفہ چناری میں جمعہ کے اجتماع میں خطاب کے دوران آزادکشمیر اسمبلی میں امتناع قادیانیت کے حوالے سے منظور شدہ قراردادوں کی روشنی میں قانون سازی کرنے ،شریعت کورٹ میں شریعت کے ماہرین کو مقرر کرنے اور آزادکشمیر کے نظام تعلیم میں سیرت الرسول اور ناظرہ قرآن پاک کو شامل کرنے اور نصاب تعلیم سے اسلامی اور علاقائی اقدار کے مغائر کی جانے والی تبدیلیوں کو ختم کرنے کی قراردادیں بھی منظور کی گئیں ۔،اس موقع پر عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت آزادکشمیر کے امیر حضرت مولانا الیاس کمی عیادت بھی کی اور ان سے آزاد ریاست جموں وکشمیر میں اسلامی قدروں کے تحفظ کیلئے دعا بھی کی گئی ۔جبکہ محلہ فرید آباد چناری میں مدرسہ تعلیم القرآن مسجد صدیق اکبر میں علماء کرام اور طلباء کیاجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا دینی مدارس اسلام کے قلعے ہیں ۔ملک کے نظریاتی تحفظ کے مراکز ہیں ۔انہوں نے کہا کہ افواج پاکستان ملک کے جغرافیائی سرحدوں کی محافظ ہیں اور مدارس نظریاتی سرحدوں کے تحفظ میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر اور برما میں بھارت اور بدھ ازم کیپیروکاروں کی طرف سے انسانیت کے قتل عام پر انسانیت شرما رہی ہے ۔اسلامی ممالک مسلمانوں کے قتل عام پر برما کے ساتھ سفارتی اور اقتصادی تعلقات پر نظر ثانی کریں اور اقوام متحدہ برمی حکومت کو دہشتگرد ڈیکلےئر کر کے ارکان کے مسلمانوں کو اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کا حق دے ۔انہوں نے کہا امریکی صدر اور برمی مظالم کے خلاف ملک بھر کی طرح آزادکشمیر میں بھی احتجاج کا سلسلہ جاری رہے گا۔اس موقع پر مرکزی ناظم اطلاعات علامہ عطاء اللہ علوی ،سابق امیدوار اسمبلی و سواد اعظم اہلسنت و الجماعت کے مرکزی رہنما مولانا محمد الطاف بٹ،مولانا قاری امتیاز احمد مغل ،مولانا قاری مقصود احمد ،جے ٹی آئی کے رہنما حافظ عبدالشکور اعوان سمیت متعدد علماء کرام اور معززین بھی موجود تھے ۔جبکہ مدرسہ سیدہ حفصہؓ میں معززین کے اجلاس کے دوران شریعت کورٹ اور نصاب تعلیم کے حوالے سے جے یو آئی کے ساتھ کیے گئے معاہدے پر عملدرآمد کرنے ،شریعت کورٹ کو بحال کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے ،اس موقع پر مولانا مفتی غلام مصطفی ،راجہ محمود احمد خان ،راجہ ممتاز حسین سمیت دیگر معززین بھی موجود تھے جبکہ جامع سیدنا امیر حمزہ گڑھی دوپٹۃ میں منعقدہ اجلاس میں پیر آف بکوٹ شریف حضرت مولانا پیر ظاہر بکوٹی ،مولانا مفتی عبدالقدیر ،مولانا عبدالوحید ،مولانا قاری دلپذیر نے بھی آزاد ریاست میں اسلامی اقدار کے تحفظ کی تائید کرتے ہوئے ہفتہ ختم نبوت و ناموس رسالت ﷺ کی تائید کی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر