شاہد خاقان عباسی نے 1988ءمیں خود ایک لائٹ ائیر کرافٹ تیار کیا تھا

شاہد خاقان عباسی نے 1988ءمیں خود ایک لائٹ ائیر کرافٹ تیار کیا تھا
شاہد خاقان عباسی نے 1988ءمیں خود ایک لائٹ ائیر کرافٹ تیار کیا تھا

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان کی تاریخ میں شاہد خاقان عباسی پہلے وزیراعظم ہیں جن کے پاس چھوٹے تجارتی طیارے اڑانے کا لائسنس ہے۔ نوائے وقت کو قابل اعتماد ذرائع نے بتایا وزیراعظم نہ صرف کمرشل پائلٹ ہیں بلکہ وہ طیاروں کی مرمت کا کام بھی جانتے ہیں۔

انہوں نے امریکہ سے الیکٹرانک انجینئرنگ میں ڈگری حاصل کی تھی۔ گزشتہ روز (ہفتہ کو) انہوں نے سرگودھا کے مصحف ائیر بیس پر ایف 16 لڑاکا طیارہ میں فلائنگ مشن مکمل کرکے پاکستان میں ایک نئی تاریخ رقم کی۔ شاہد خاقان عباسی کے والد سابق وزیر پیداوار خاقان عباسی مرحوم نے پاک فضائیہ کو بطور پائلٹ جوائن کیا تھا اور ائیر کموڈور کے عہدے سے ریٹائرڈ ہوئے تھے ۔

سمندری طو فان ہم جنس پرستو ں کی وجہ سے آئے :مسیحی رہنما

مرحوم ڈپٹی چیف آف ائیر سٹاف اور پی آئی اے کے منیجنگ ڈائریکٹر بھی رہے ان کے بیٹے شاہد خاقان عباسی 1988 ءمیں والدکی اوجڑی کیمپ دھماکے میں شہادت کے بعد سیاست میں آئے۔ 1988ءمیں شاہدخاقان عباسی نے ایک لائٹ ائیر کرافٹ تیار کیا تھا ۔ جو بعد میں انہوں نے تربیتی مقاصد کے لئے راولپنڈی کے فلائنگ کلب کو دے دیا تھا ۔

ہوا بازی میں ان کی دلچسپی کے پیش نظر سابق وزیراعظم نوازشریف نے 1997ءمیں انہیں پی آئی اے کا چیئرمین مقرر کیا تھا۔ سابق وزیراعظم نوازشریف پر طیارہ سازش کیس میں شاہد خاقان عباسی شریک ملزم تھے اور نوازشریف کے ساتھ جیل میں بھی رہے۔ شاہد خاقان عباسی نے نئی ائیر لائن ائیر بلیو کی بنیاد رکھی۔

مزید : اسلام آباد