چینی اور بھارتی اعلیٰ حکام کی رات کے 2 بجے خفیہ ترین ملاقات، اس میں کیا بات کی گئی؟ تہلکہ خیز تفصیلات سامنے آگئیں

چینی اور بھارتی اعلیٰ حکام کی رات کے 2 بجے خفیہ ترین ملاقات، اس میں کیا بات کی ...
چینی اور بھارتی اعلیٰ حکام کی رات کے 2 بجے خفیہ ترین ملاقات، اس میں کیا بات کی گئی؟ تہلکہ خیز تفصیلات سامنے آگئیں

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) ڈوکلام کے خطے میں چینی اور بھارتی فوج کئی ہفتے تک آمنے سامنے رہی اور بظاہر تلخی اس قدر بڑھ چکی تھی کہ نوبت جنگ تک پہنچتی نظر آ رہی تھی۔ پھر اچانک دونوں ملکوں نے اپنی افواج علاقے سے واپس بلا لیں اور جھگڑا ختم ہو گیا۔ اب معلوم ہوا ہے کہ 27اگست کو چینی اور بھارتی حکام کی رات 2بجے بیجنگ میں ملاقات ہوئی تھی جس کے بعد دونوں ملکوں نے اپنی افواج واپس بلائیں۔

انڈیا ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق چین میں بھارت کے سفیر وجے گوکھل سے 27اگست کو چینی حکام نے رابطہ کیا اور پوچھا کہ وہ کتنی جلدی ان سے ملاقات کر سکتے ہیں؟ جواب میں گوکھل نے بتایا کہ ”میںہانگ کانگ میں ہوں اور اگر پہلی دستیاب فلائٹ بھی پکڑوں تو آدھی رات تک ہی بیجنگ پہنچ پاﺅں گا۔“ تاہم چینی حکام کی طرف سے انہیں فوری طور پر بیجنگ پہنچنے کی ہدایت کی۔ آدھی رات کو وجے گوکھل بیجنگ پہنچے اور رات دو بجے ان کی چینی حکام کے ساتھ ملاقات ہوئی جو تین گھنٹے تک جاری رہی۔

بھارتی حکومت کے سینئر ذرائع کے حوالے سے انڈیاٹائمز نے بتایا ہے کہ ”اس ملاقات میں فریقین نے اس بات پر اتفاق کیا کہ دونوں ملک پارٹنرشپ سے ایسے فوائد حاصل کر سکتے ہیں جو ان کی ترقی کی رفتار تیز تر کر دیں گے۔ اس کے برعکس اگر وہ دوسرے کے نقصان میں اپنا فائدہ دیکھنے کی سوچ اپنائے رہے تو یہ احمقانہ بات ہو گی۔ یہ وہ بات تھی جس پر اتفاق ہونے سے ڈوکلام کا تنازعہ حل ہو گیا اور دونوں ملکوں نے فوجیں واپس بلا لیں۔ “

مزید : بین الاقوامی