حکومت فیصلہ کرے ذلت کی موت مرنایاجرات کیساتھ کشمیریوں کا ساتھ دینا ہے: سراج الحق

حکومت فیصلہ کرے ذلت کی موت مرنایاجرات کیساتھ کشمیریوں کا ساتھ دینا ہے: سراج ...

  



لاہور،ساہیوال (این این آئی، بیورو رپورٹ) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ بھارت کشمیر پر قبضہ کرکے پاکستان کو بنجر بنانا چاہتا ہے۔اب حکومت کو فیصلہ کرنا ہے کہ ذلت کی موت مرنا ہے یا جرأت کے ساتھ کشمیریوں کا ساتھ دینا ہے۔مسئلہ کشمیر پر 72سال سے حکمران محض بیانات پر اکتفا کررہے ہیں۔آج تک مسئلہ کشمیر ہماری حکومتوں کی نااہلی اور نالائقی کی وجہ سے حل طلب ہے۔موجودہ حکومت نے بھی اب تک آنیاں جانیاں کی ہیں، کوئی عملی قدم نہیں اٹھایا۔حکمران آخری گولی اور آخری سانس کی بات کرتے ہیں مگر پہلا قدم اٹھانے کو تیار نہیں۔حکمران ٹیپو سلطان کی مثالیں دیتے ہیں مگر ان کے نقش قدم پر چلنے کو تیار نہیں۔قوم چاہتی ہے کہ حکومت جرأت کے ساتھ کشمیر یوں کا ساتھ دے۔ہمارا جینا اور مرنا کشمیریوں کے ساتھ ہے۔ ہمارادشمن ایٹم بم سے نہیں جہاد سے ڈرتا ہے۔موجودہ حکمرانوں کو خوش فہمی ہے کہ ٹرمپ کشمیر پر ثالثی کرے گا۔6اکتوبر کو زندہ دلان لاہور لاکھوں کی تعداد میں کشمیر مارچ میں شریک ہوکر اپنے کشمیر ی بھائیوں سے اظہار یکجہتی کریں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ماڈل ٹاؤن لاہور میں یکجہتی کشمیر کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔کنونشن سے جماعت اسلامی پنجاب وسطی کے امیر محمد جاوید قصوری اور امیر جماعت اسلامی لاہور ڈاکٹر ذکر اللہ مجاہد نے بھی خطاب کیا۔اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات جماعت اسلامی پاکستان قیصر شریف اور نائب امیر جماعت اسلامی لاہور ملک شاہد اسلم بھی موجود تھے۔ علامہ ابوالنصر منظور احمد شاہ کی دینی، علمی و قومی خدمات کو ہمیشہ سنہرے حروف میں یاد رکھا جائے گا، تفسیر نورُ القرآن، جلوۂ جاناں اور مدینۃ الرسول سمیت سو سے زائد کتب ان کا علمی سرمایہ ہے جو تشنگان علم کی پیاس بجھاتا رہے گا، ان خیالات کا اظہار امیر جماعت اسلامی سراج الحق، سابق وفاقی وزیر مملک صاحبزادہ امین الحسنات،جمعیت علماء پاکستان (نورانی گروپ) کے مرکزی صدرابوالخیر ڈاکٹر محمد زبیر،پر نٹ میڈیا ایسو سی ایشن کے سر پرست حاجی اسمٰعیل، صدر رانا وحید،جنرل سیکرٹری عثمان علی،چئیر مین الطاف الرحمن،احسن امین،ملک غلام عباس گو ہر،راؤ عتیق، پی ایف یو جے کے ڈویژنل جنرل سیکرٹری عمر منظور نے جامعہ فریدیہ میں پیر فیض الحسن شاہ، ڈاکٹرمفتی محمد مظہر فرید شاہ اور علامہ محمد اظہر فرید شاہ سے تعزیت کرتے کیا انہوں نے کہا کہ علامہ ابوالنصر کی علمی خدمات کامظہر جامعہ فریدیہ جیسا عظیم ادارہ ہے جو اٹھاون سال سے قائم ہے اور اس وقت بھی دو ہزار سے زائد طلبہ و طالبات زیر تعلیم ہیں جو قرآن و حدیث کے زیور تعلیم سے آراستہ ہو رہے ہیں، ان کی عارفانہ، مجاہدانہ،صوفیانہ اور عالمانہ زندگی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں۔ یاد رہے کہ علامہ ابوالنصر کی دینی خدمات کے اعتراف میں ملک بھر میں فرید العصر کانفرنسز منعقد کروائی جارہی ہیں۔

سراج الحق

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...