نٹ ویئر بر آمدات بڑھ کر 271ارب ڈالر تک پہنچ گئیں 

نٹ ویئر بر آمدات بڑھ کر 271ارب ڈالر تک پہنچ گئیں 

لاہور(اے پی پی) مالی سال 2018-19 ء کے دوران نٹ ویئر سیکٹرمیں سب سے زیادہ ایکسپورٹ ہوئیں جن کا حجم 2017-18ء میں 2.36ارب ڈالراور اب 15.17فیصد بڑھ کر 2.71ارب ڈالر تک پہنچ گیا جبکہ ٹیکسٹائل سیکٹر ایکسپورٹ پاکستان کی مجموعی ایکسپورٹ کا 58فیصداور عالمی منڈی میں پاکستان کی ٹیکسٹائل ایکسپورٹ کا حصہ 2.05فیصد ہے نیزپاکستان کی نٹ ویئر انڈسڑی ویلیو ایڈیشن میں اہم کردار ادا کر رہی ہے لہٰذا ویلیوایڈڈٹیکسٹائل سمیت دیگر برآمدی شعبوں کی مشکلات کا احاطہ کرکے برآمدات کو فروغ دے کر بڑھتے ہوئے تجارتی خسارے پر قابو پانا ممکن ہے۔ پاکستان ہوزری مینوفیکچررزایسوسی ایشن کے ترجمان نے بتایا کہ برآمدکنندگان کو درپیش مالی دشوایورں اور مینوفیکچرنگ کی لاگت میں اضافے کے باوجود نٹ ویئر ہوزری ایکسپورٹ میں اضافہ اس امر کی عکاسی کرتا ہے کہ اس شعبے پر حکومت اگر مطلوبہ توجہ دے تو برآمدات میں خاطر خواہ اضافہ ممکن ہوسکے گا۔ انہوں نے کہا کہ اگر نٹڈفیبرک اور بیڈشیٹس کو شامل کرلیا جائے تو نٹ ویئر برآمدات کی مالیت 3.5ارب ڈالر ہے جو ٹیکسٹائل ایکسپورٹ گروپ کا 25.86فیصد اور پاکستان کی مجموعی ایکسپورٹ کا 15فیصد بنتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بنگلہ دیش کی نٹ وئیر ایکسپورٹ 15.18ارب ڈالر ہیں جو اس کی مجموعی ٹیکسٹائل ایکسپورٹ 30.61ارب ڈالر کا نصف ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں نٹ ویئر سیکٹرلاکھوں افراد کو روزگار فراہم کرتا ہے جس میں سب سے زیادہ ملازمتیں خواتین کو فراہم کی جاتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی مجموعی برآمدات 20.42ارب ڈالر سے 13.71فیصد کی شرح سے بڑھ کر سال 2018-19 ء میں 23.22ارب ڈالر تک پہنچ گئی ہیں نیزٹیکسٹائل گروپ کی ایکسپورٹ12.45ارب ڈالر سے 8.67فیصد اضافے کے ساتھ 13.53ارب ڈالر تک پہنچ گئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ٹیکسٹائل سیکٹر ایکسپورٹ پاکستان کی مجموعی ایکسپورٹ کا 58فیصد ہیں جبکہ عالمی منڈی میں پاکستان کی ٹیکسٹائل ایکسپورٹ کا حصہ 2.05فیصد ہے اس طرح پاکستان کی نٹ ویئر انڈسڑی ویلیو ایڈیشن میں اہم کردار ادا کر رہی ہے جبکہ اس سیکٹر کی ترقی کے بہت زیادہ امکانات ہیں۔انہوں نے کہا کہ نٹ ویئر سیکٹر میں اپیرل،سپورٹس وئیر، موزے،دستانے وغیرہ کی مصنوعات کے لیے ویلیو ایڈیشن کی جاتی ہے مگر خطے کے مسابقتی ممالک بالخصوص بھارت،بنگلہ دیش اور مشرق بعید کے ممالک کے ساتھ مقابلے کے لیے نٹ ویئر سیکٹر کو مطلوبہ توجہ درکار ہے۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ نٹ ویئر ہوزری سیکٹرجو پاکستان کیلئے سب سے زیادہ زرمبادلہ کماتا ہے اور جس کا ٹیکسٹائل ایکسپورٹ اور ملکی مجموعی ایکسپورٹ میں سب سے زیادہ حصہ ہے پر حقیقی توجہ دے تاکہ نٹ ویئر سیکٹر ایکسپورٹ کے فروغ کی خاطر مصنوعات میں مزید جدت لائی جاسکے اور مصنوعات کی اقسام میں بھی اضافہ ممکن ہو۔انہوں نے کہا کہ اگر مجموعی طور پر ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل سیکٹرکو حکومت سپورٹ کرے اور تمام سہولتیں یقینی بنائے تو پاکستان کے ٹیکسٹائل گروپ کی ایکسپورٹ آئندہ چند سالوں میں 65ارب ڈالر تک پہنچ سکتی ہیں جس سے تجارتی خسارہ مکمل طور پر ختم ہو سکتا ہے۔

مزید : کامرس


loading...