آئین کی اسلامی شقو ں سے چھیڑ خانی پر سخت مزاحمے کرینگے،مقررین ختم نبوت کانفرنس 

    آئین کی اسلامی شقو ں سے چھیڑ خانی پر سخت مزاحمے کرینگے،مقررین ختم نبوت ...

  



لاہور(خصوصی رپورٹ) مجلس احراراسلام پاکستان کے زیراہتمام عظیم الشان سالانہ ختم نبوت کانفرنس کے مقررین نے کہاہے کہ عالمی طاقتوں کے دباؤ پرآئین کی اسلامی شقوں سے چھیڑخانی کی گئی تو سخت مزاحمت کریں گے اور عقیدہ ختم نبوت پر کسی قسم کی کوئی لچک نہیں دکھائی جائے گی۔تفصیلات کے مطابق مجلس احراراسلام پاکستان کے زیرانتظام میاں محمد اویس کی نگرانی میں منعقدہ ختم نبوت کانفرنس سے سید محمد کفیل بخاری،عبداللطیف خالد چیمہ، لیاقت بلوچ، مولانا محمد امجد خان،سید عطاء اللہ شاہ ثالث،قاری علیم الدین شاکر،بیرسٹر عامر حسن،خواجہ عمران نذیر،مولانا مفتی عزیزالرحمن،حافظ ابراہیم نقشبندی،حافظ عابد مسعود ڈوگر،مفتی غلام حسین نعیمی،مولانا شفیع الرحمن، حکیم محمد ماجد،مولانا محمد اسلم ندیم نقشبندی،مولانا تنویرالحسن احرار، مولانا فداء الرحمن، قاری محمد قاسم بلوچ، مولانا محمد سرفرازمعاویہ،قاری مومن شاہ، حافظ حسن افضال صدیقی، قاری آصف اللہ،حافظ حماد، قاری محمد عثمان، مزمل حسن، مدثر برادران،حافظ سیف اللہ سائبان،حافظ ابوبکراشرف مدنی اور محمد علی سے خطاب کیا۔جماعت اسلامی کے نائب امیر لیاقت بلوچ نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مجلس احراراسلام اورخاندان ِامیرشریعت نے تحفظ ختم نبوت کے تسلسل کو جاری رکھا ہواہے۔جس پرمیں انہیں مبارکباد پیش کرتاہوں۔انہوں نے کہاکہ ایک جانب ختم نبوت کے قوانین کے خاتمہ کیلئے قادیانیوں کے ذریعے خطرناک سازشیں ہورہی ہیں تو دوسری طرف کشمیر کے مسئلہ پر سفارتی محاذ بہت کمزور جارہاہے۔سید محمد کفیل بخاری نے کہاکہ ہم قادیانیوں کی ہرسازش سے باخبرہیں اورمجلس احراراسلام اپنے اسلاف کے نقش قدم پرچلتے ہوئے تحفظ ختم نبوت کے محاذ پر ڈٹی ہوئی ہے۔عبداللطیف خالد چیمہ نے کہاکہ امت مسلمہ کی تاریخ اس بات کی گواہ ہے کہ مسلمانوں نے عقیدہ ئ ختم نبوت پر کبھی بھی سمجھوتہ نہیں کیا۔مولانا امجد خان نے کہاکہ سید عطاء اللہ شاہ بخاری کے نام وکردار اور گفتارسے آج بھی جذبہ زندہ ہوجاتاہے۔انہوں نے کہاکہ دینی قوتوں کے اتحاد کے نتیجہ میں سیکولر قوتوں کو شکست دی جاسکتی ہے۔سید عطاء اللہ شاہ ثالث نے کہاکہ انگریز کے خود کاشتہ پودے قادیانیت کے سدباب کیلئے عصری تقاضوں کے ساتھ مقابلہ کرنے کی اشد ضرورت ہے۔بیرسٹر عامر حسن نے کہاکہ جب امت متحد ہوتی ہے تو فتنے ختم ہوجاتے ہیں۔خواجہ عمران نذیر نے کہاکہ ریاست مدینہ کے قیام کا نام تو لیاجاتاہے لیکن حکمرانوں کا عمل کردار اس کے برعکس ہے۔مولانامفتی عزیزالرحمن نے کہاکہ بڑی قربانیوں کے بعد 1974ء میں ختم نبوت کا پارلیمنٹ میں دفاع کیاگیا اوریہ قانون ان شاء اللہ تعالیٰ ہمیشہ قائم رہے گا۔کانفرنس کی قراردادوں میں مطالبہ کیاگیاکہ اسلامی نظریاتی کونسل کی سفارشات کی روشنی میں ارتداد کی شرعی سزا نافذکی جائے اور چناب نگر (ربوہ) کے مکینوں کو مالکانہ حقوق دیئے جائیں۔ربوہ سے قادیانی تسلط ختم کرایا جائے اورقادیانی جماعت کو خلاف قانون قراردیاجائے۔

ختم نبوت کانفرنس

مزید : صفحہ آخر


loading...