لڈن‘ اعلیٰ افسران بے گناہ قرار‘ 2 کا جسمانی‘ 4 کا جوڈیشل ریمانڈ منظور

  لڈن‘ اعلیٰ افسران بے گناہ قرار‘ 2 کا جسمانی‘ 4 کا جوڈیشل ریمانڈ منظور

  



وہاڑی(بیورورپورٹ+نمائند ہ خصوصی) تھانہ لڈن خاتون پر تشدد کا معاملہ ایف آئی آر میں نامزد 9ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ اور جسمانی ریمانڈ کیلئے علاقہ مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا گیا پولیس افسران کی جانب سے پیٹی بھائیوں کو بچانے کی سرتوڑ کوششیں تفصیل کے مطابق پولیس تھانہ لڈن میں خاتون پر تشدد کیس کے سلسلہ میں گزشتہ روز گرفتار کئے گئے 9نامزد ملزمان کو علاقہ مجسٹریٹ ارشد محمود گوندل کی عدالت میں پیش کیا گیا اعلی پولیس افسران نے اپنے پیٹی بھائی ڈی ایس پیراؤ طارق پرویز کو(بقیہ نمبر29صفحہ12پر)

مقدمہ سے ڈسچارج کرکے ملبہ ماتحت اہلکاروں پر ڈال دیا ایس پی انسویسٹی گیشن کوثر پروین نتے تفتیش میں ڈی ایس پی صدر راؤ طارق، آئی ٹی انچارج عظیم، محرر سی آئی اے محمد شوکت کو بے گناہ قرار دے دیا جبکہ علاقہ مجسٹریٹ نے ایس پی انویسٹی گیشن کی رپورٹ پر ڈی ایس پی صدر سمیت 3ملزمان کو مقدمہ سے نکال دیا جبکہ ایس ایچ او تھانہ لڈن عارف شاہ،اے ایس آئی طارق حسین شاہ، انچارج سی آئی اے امجد اور کانسٹیبل مزمل اقبال کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا گیا جبکہ ملزمان ہارون، فیاض،محمد زردان کو پانچ روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالہ کردیا گیا دوسر ی جانب میڈیا پر اپنے پیٹی بھائیوں کے خلاف سچ بولنے والی لیڈی محرر شکیلہ بانوں کو عدالت نے ایک لاکھ روپے کے ذاتی مچلکوں پر ضمانت دے دی اس موقع پر پولیس نے احاطہ عدالت کو چاروں طرف سے گھیرے رکھا شہریوں سمیت میڈیا کی بھی عدالتی کاروائی دیکھنے پر پابندی لگائے رکھی احاطہ عدالت نو گو ایریاکا منظر پیش کرتا رہا جبکہ مقدمہ میں نامزد ملزمان ڈی ایس پی صدر سمیت دیگر کو مکمل پروٹوکول کے ساتھ عدالت میں پیش کیا گیا جبکہ پولیس اہلکار اپنے نامزد ملزمان پیٹی بھائیوں کی عدالت میں پزا اور ٹھنڈے مشروبات سے آؤ بھگت بھی کرتے رہے عدالت نے وکلاء کی بحث کے بعد چار بجے فیصلہ محفوظ کرلیا اور علاقہ مجسٹریٹ نے ساڑھے چھ بجے فیصلہ سنایا مقدمہ میں نامزد ڈی ایس پی صدر راؤ طارق پرویز کی جانب سے صدر بار چوہدری شکیل احمد تارڑ اور جنرل سیکرٹر ی علی اعجاز چوہدری نے وکالت کے فرائض سرانجام دیئے۔

بے گناہ قرار

مزید : ملتان صفحہ آخر