لانگ مارچ میں شمولیت کا فیصلہ اے پی سی میں کرینگے، ملک کو بند گلی سے نکالنے کا واحد راستہ عام انتخابات: مسلم لیگ (ن) 

لانگ مارچ میں شمولیت کا فیصلہ اے پی سی میں کرینگے، ملک کو بند گلی سے نکالنے کا ...

لاہور(آئی این پی) مسلم لیگ (ن) کے رہنما احسن اقبال نے کہا ہے کہ صلاح الدین کی گرفتاری اور گھر کا پتہ چلنے کے بعد اہل خانہ سے رابطہ نہ کرنا مجرمانہ غفلت ہے، لیڈی کا نسٹیبل کو تھپڑ مارا گیا، حکومت اسے بھی تحفظ فراہم نہ کر سکی، ایک سال کی حکمرانی میں ملک دس سال پیچھے چلا گیا، حکمرانوں نے بند گلی میں ملک کھڑا کر دیا ہے جس سے نکلنے کا راستہ 2020ء میں شفاف انتخابات ہے۔ مولانا فضل الرحمن کے لانگ مارچ میں شمولیت کا فیصلہ اے پی سی میں کیا جائیگا۔ سابق وزیر داخلہ احسن اقبال موضع گورالی میں رحیم یار خان پولیس کے مبینہ تشدد سے جاں بحق صلاح الدین کے گھر پہنچے اور والد افضال احمد سے تعزیت کی۔ احسن اقبال نے کہا کہ اس واقعے نے پورے پاکستان کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا ہے۔ قانون اور انتظامیہ مکمل طور پر فیل ہو چکی ہے۔انہوں نے کہا چیف جسٹس پاکستان صلاح الدین اور لیڈی کا نسٹیبل کے واقعات کا از خود نوٹس لیں۔احسن اقبال نے کہا ایک سال کی حکمرانی میں ملک دس سال پیچھے چلا گیا، اناڑیوں سے بربادی ہو سکتی ہے ملک نہیں چلائے جا سکتے۔ مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ عمران صاحب ٹویٹ سے نوجوانوں کو جھوٹا درس دیکر آپ اپنی نالائقی پہ تنقید کا خوف ختم نہیں کر سکتے، عمران صاحب اپنی نالائقی پہ تنقید کے ڈر سے تو آپ نے پوری اپوزیشن اور ہر مخالف آواز بند کر دی ہے، عمران صاحب آپ تنقید سننا برداشت نہیں کرتے اِس لئے ایک سال میں ہر شعبہ میں تبدیلی کی جگہ صرف تباہی ہے۔ انہوں نے وزیراعظم عمران خان کے ٹویٹ پہ ردِ عمل میں کہا عمران صاحب اگر آپ اپنی نالائقی پہ تنقید برداشت کر سکتے تو آج معیشت، کاروبار اور روزگار تباہ نہ ہوتا، عمران صاحب اگر آپ اپنی نالائقی پہ تنقید برداشت کر سکتے تو ایک سال میں ترقی کی شرح آدھی اور مہنگائی تین گنا نہ ہوتی، عمران صاحب اگر آپ اپنی نالائقی پہ تنقید برداشت کر سکتے تو پشاور میٹرو کے ایک کھرب کے کھڈے میٹرو میں تبدیل ہو چکے ہوتے۔

مسلم لیگ (ن)

مزید : صفحہ اول


loading...