"شہباز گل بھائی اگر ممکن ہوتو ان دو سوالات کے جواب دیدیں تا کہ۔۔۔"پنجاب پولیس کی طرف سے موبائل فون کے استعمال پر پابندی کے نوٹیفکیشن آتے ہی تحریک انصاف کے سوشل میڈیا ورکر ڈاکٹر فرحان ورک بھی میدان میں آگئے

"شہباز گل بھائی اگر ممکن ہوتو ان دو سوالات کے جواب دیدیں تا کہ۔۔۔"پنجاب پولیس ...

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )حال ہی میں پولیس کے شہریوں کے ساتھ کیے جانے والے مظالم کی ویڈیوز نے تہلکہ مچایا جس کے بعد سونے پر سہاگہ یہ کہ تھانوں میں موبائل فون لے جانے پر ہی پابندی لگا دی گئی تاہم اب تحریک انصاف کے سوشل میڈیا ورکر ڈاکٹر فرحان ورک خود میدان میں آ گئے ہیں اور وزیراعلیٰ پنجاب کے ترجمان شہباز گل سے اہم ترین سوالا ت کے جوابات مانگ لیے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق فرحان ورک نے ٹویٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے کہا کہ بڑی کنفیوژن ہے، ایک نوٹیفکیشن نکلا ہے جس کے مطابق پولیس والوں کے نزدیک موبائل فون نہیں استعمال کر سکتے ، شہباز گل بھائی سے کچھ سوال ہیں ، اگر وہ ان کا جواب دے دیتے ہیں تو سب کچھ واضح ہو جائے گا ۔

فرحان ورک کا کہناتھا کہ ایک اردو نوٹیفکیشن ہے اور ایک انگریزی ، سب سے پہلے اردو نوٹیفکیشن میں صاف صاف لکھاہے کہ تھانے میں موبائل فون نہیں لے جا سکتے، وہ باہر ہی گیٹ پر رکھ لیا جائے گا اور پھر آپ اندر جا کر شکایت درج کروائیں گے ،یہاں یہ تو واضح ہو گیا کہ عوام بھی تھانے میں موبائل نہیں لے جا سکتی ،اب شہباز بھائی یہ بتا دیں کہ اردو نوٹیفکیشن کی کیا حیثیت ہے وہ لاگو ہواہے کہ نہیں۔؟

فرحان ورک کا کہناتھا کہ دوسرا انگریزی نوٹیفکیشن ہے جس میں لکھا ہے کہ پولیس والے دوران ڈیوٹی ٹیلیفون استعمال نہیں کر سکتے لیکن اس نوٹیفکیشن کے دوسرے پہرے میں نہایت دلچسپ بات لکھی ہے کہ اگر کوئی پولیس اہلکارآن ڈیوٹی ہے تو آپ اس کی ویڈیو نہیں بنا سکتے اور اگر بنائی تو آپ کے خلا ف محکمانہ کارروائی ہو گی۔

انہوں نے کہا کہ اب بات یہ ہے کہ پولیس والے کی ویڈیوپولیس والے نہیں بنا سکتے یا عوام نہیں بنا سکتے کیونکہ پنجاب پولیس نے کہاہے کہ موبائل فون کے استعمال پر پابندی نہیں لگائی گئی ہے ۔ان کا کہناتھا کہ کہیں یہ نہ کہ موبائل فون استعمال کرنے پر پابندی نہ ہو لیکن اگر کسی پر ظلم و زیادتی دیکھ کر ویڈیو بنانے لگتے ہیں تو اس پر پابندی ہے ، بات تو پھر وہیں آجائے گی جس طرح وہ کہہ رہے ہیں کہ ہم نے موبائل فون پر پابندی نہیں لگائی ۔

فرحان ورک کا کہناتھاکہ انگلش نوٹیفکیشن کے مطابق موبائل فون پر پابندی نہیں ہے، یعنی میں تھانے میں گیم کھیل سکتاہوں ، کال کر سکتا ہوں لیکن اگر کوئی غلط کام کرنے لگا تواور میں اس کی ویڈیو بناﺅں تو وہ قانوناً جرم ہو گا۔ ان کا کہناتھا کہ یہ دو سوال ہیں ،اردو اور انگریزی نوٹیفکیشن والے، شہبازگل صاحب یہ دو چیزیں واضح کر دیں تاکہ عام عوا م کسی مصیبت کا شکار نہ ہوں ۔

مزید : قومی