تاریخی پلازہ سنیما کی عمارت میں آرٹ گیلری کی تعمیر جاری 

    تاریخی پلازہ سنیما کی عمارت میں آرٹ گیلری کی تعمیر جاری 

  

لاہور(فلم رپورٹر)1933ء میں لاہور کی کوئنز روڈ پر ساگر تھیٹر کے نام سے ایک شاہکار سنیما ہال کا قیام عمل میں آیا ساگر تھیٹر کی عمارت کا شمار چند خوبصورت سنیما ہالز میں کیا جاتا تھا قیام پاکستان کے بعد ساگر تھیٹر کا نام تبدیل کرکے پلازہ سنیما رکھ دیا گیا تاریخی اہمیت کے اس سنیما گھر میں زیادہ تر انگریزی فلموں کی نمائش کی گئی اس کے علاوہ اس سنیما ہال میں پاکستانی اور بھارتی فلموں کی نمائش کے علاوہ سٹیج ڈرامے بھی پیش کئے گئے اس سنیما ہال میں 700افراد کے بیٹھنے کی گنجائش موجود تھی سنیما انڈسٹری کے بڑھتے ہوئے بحران کے بعد  اسے فلموں کے لئے بند کرکے سٹیج ڈراموں کو پیش کرنے کیلئے تھیٹر بنانے کا فیصلہ کی گیا مگربطور تھیٹر بھی زیادہ کامیابی حاصل نہ ہوسکی۔پلازہ تھیٹر کی پرانی عمارت کو گراکر یہاں پر آرٹ پلازہ بنایا جا رہا ہے جس میں یوگا اور ڈانس کلاسز کے ساتھ ساتھ آرٹ گیلیری بھی بنائی جارہی ہے ڈانس کلاسز کیلئے لکڑی کے فرش بنائے جائیں گے  پلازہ سنیما کے روح رواں جہانزیب بیگ کے مطابق پرانی عمارت کے نقشے میں کوئی تبدیلی نہیں کی جائیگی البتہ مختلف سائز کے ہال بنائے جائیں گے جہاں فن و ثقافت کے فروغ کا کام کیا جا ئے گا آنے والے دور میں فن و ثقافت کے فروغ میں آرٹ پلازہ کا نمایاں کردار ہوگا یاد رہے کہ بھارتی تاریخی فلم ”تاج محل“کا پریمئر پلازہ سنیما میں ہی ہوا تھا اورانگریزی فلم ”ریانز ڈاٹر“ کی نمائش بھی پلازہ سنیما میں کی گئی تھی۔ 

پلازہ سنیما

مزید :

صفحہ آخر -