نوازشریف کوریلیف ملے گایانہیں،15 ستمبرکوفیصلہ ہوگا،اسلام آبادہائیکورٹ نے آئندہ سماعت پر دلائل طلب کرلئے

نوازشریف کوریلیف ملے گایانہیں،15 ستمبرکوفیصلہ ہوگا،اسلام آبادہائیکورٹ نے ...
نوازشریف کوریلیف ملے گایانہیں،15 ستمبرکوفیصلہ ہوگا،اسلام آبادہائیکورٹ نے آئندہ سماعت پر دلائل طلب کرلئے

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آبادہائیکورٹ نے العزیزیہ ریفرنس میں نوازشریف کی درخواست پر سماعت15 ستمبر تک ملتوی کردی ، نوازشریف کی درخواست سنی جاسکتی ہے یانہیں،نوازشریف اشتہاری ہونے کے بعدریلیف کے مستحق ہیں یانہیں؟۔عدالت نے دلائل طلب کرلئے۔

اسلام آبادہائیکورٹ نے کہاکہ نوازشریف کوریلیف ملے گایانہیں،15 ستمبرکوفیصلہ ہوگا،فریقین دلائل دیں،سرنڈرکیے بغیردرخواست پر سماعت ہوسکتی ہے یانہیں؟،نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث اورنیب پراسیکیوٹرسے آئندہ سماعت پردلائل طلب کرلئے گئے ۔

العزیزیہ ریفرنس میں نوازشریف کی سزا کیخلاف اپیل پر سماعت ہوئی،جسٹس عامرفاروق اورجسٹس محسن اخترکیانی نے سماعت کی،عدالت نے استفسار کیا کہ توشہ خانہ ریفرنس میں نوازشریف اشتہاری قراردیئے گئے؟،نیب پراسیکیوٹر نے کہاکہ نوازشریف احتساب عدالت کے اشتہاری ہوچکے ہیں ،عدالت نے استفسار کیاکہ اشتہاری ہونے کے بعدنوازشریف کی درخواست پرکیااثرپڑےگا؟،اشتہاری ہونے کے بعدکیاہم نوازشریف کی درخواست پرسماعت کرسکتے ہیں؟۔

نیب نے کہاکہ توشہ خانہ ریفرنس میں اشتہاری ہونے کے بعدنوازشریف کوریلیف نہیں مل سکتا،عدالت نے کہاکہ مشرف کیس میں قراردیاجاچکامفرورکوسرنڈرسے قبل نہیں سناجاسکتا،نسیم الرحمان کیس میں سپریم کورٹ مفرورکوریلیف کیلئے غیرحقدارقراردے چکی۔

عدالت نے کہاکہ نوازشریف کی سزاکیخلاف اپیل پرکوئی فیصلہ نہیں کررہے،نوازشریف کی پیشی کے بغیرنمائندہ مقررکرنےکی درخواست سنی جاسکتی ہے؟۔

عدالت نے استفسار کیاکہ کیا نوازشریف کسی ہسپتال میں زیرعلاج ہیں؟خواجہ حارث نے جواب دیتے ہوئے کہاکہ اس وقت نوازشریف کسی ہسپتال میں زیرعلاج نہیں،عدالت نے استفسار کیاکہ نوازشریف برطانیہ،ڈاکٹرامریکامیں ہیں،کیازبانی علاج ہے؟خواجہ حارث نے کہاکہ نوازشریف کی اپیل کوسناجائے،اپیل تومفرورکی بھی سنی جاتی ہے،عدالت نے کہاکہ نوازشریف کوپہلے مفرورقراردیتے ہیں پھراپیل سن لیتے ہیں،نوازشریف کی عدم حاضری پروفاقی حکومت کاکیاموقف ہے؟۔

وفاقی حکومت نے کہاکہ نوازشریف کی میڈیکل رپورٹس نامکمل ہیں،پنجاب حکومت نوازشریف کی ضمانت مستردکرچکی،عدالت نے استفسر کیاکہ نوازشریف بیرون ملک گئے،وفاقی حکومت نے علاج کی تصدیق کی؟،ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہاکہ نوازشریف کے علاج کی تصدیق نہیں کی کیونکہ علاج ہی نہیں ہوا،عدالت نے استفسار کیاکہ وفاقی حکومت نے نوازشریف کی واپسی کیلئے کچھ نہیں کیا؟

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -