لڑکیوں کے بعد اب مردوں کو بھی فیس بک پر بلیک میل کیا جانے لگا

لڑکیوں کے بعد اب مردوں کو بھی فیس بک پر بلیک میل کیا جانے لگا

  

لاہور(نامہ نگار) لڑکیوں کے بعد اب مردوں کو بھی فیس بک پر بلیک میل کیا جانے لگا، عدالت نے فیس بک انتظامیہ کو مردوں کو بلیک میل کرنے والی ملزماؤں کے اکاؤنٹس کے ریکارڈ فراہم کرنے کاحکم دے دیاہے۔ضلع کچہری کے جوڈیشل مجسٹریٹ فاروق اعظم سوہل کے روبرو ایف آئی اے نے دو درخواستیں دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ درخواست گزار افنان مجید کو نامعلوم ملزمہ نے فاطمہ شیخ کے نام سے جعلی فیس بک اکاؤ نٹ بنا کر درخواست گزار افنان مجیدکی خاتون کے ساتھ کیفے میں بیٹھے تصاویر اپ لوڈ کی ہیں اور افنان مجید کو بلیک میل کیا جا رہا ہے جبکہ درخواست گزار چودھری مہتاب غنی کا بھی چودھری مہتاب کے نام سے فیس بک پر جعلی اکاؤنٹ بنایا گیا جس کے ذریعے درخواست گزار کے خاندان کی تصاویر غیر قانونی طور پر اس کے خاندان کے اکاؤنٹس پر شیئر کرنے کے ساتھ ساتھ غیر اخلاقی اور دھمکی آمیز پیغامات بھی بھجوائے جا رہے ہیں۔ درخواستوں میں مزید کہا گیا ہے کہ افنان مجید اور چودھری مہتاب غنی کے فیس بک کے جعلی اکاؤنٹس بنا کر انہیں بدنام کیا جا رہا ہے ،جعلی فیس بک اکاؤنٹس کا رجسٹریشن ڈیٹا فراہم کرنے کا حکم دیا جائے اور جعلی فیس بک آئی ڈی ہولڈرز کی فیس بک سرگرمیوں کا ریکارڈ بھی فراہم کرنے کاحکم دیا جائے۔ عدالت نے دلائل سننے اور ریکارڈ کا جائزہ لینے کے بعد فیس بک انتظامیہ کو مردوں کو بلیک میل کرنے والی ملزماؤں کے اکاؤنٹس کے ریکارڈ فراہم کرنے کاحکم دے دیاہے۔

بلیک میل

مزید :

صفحہ آخر -