ویجیٹیبل فیٹ سے تیار ڈیزرٹس کو ڈیری آئس کریم کے طور پر فروخت جرم

ویجیٹیبل فیٹ سے تیار ڈیزرٹس کو ڈیری آئس کریم کے طور پر فروخت جرم

  

لاہور(کامرس رپورٹر)پنجاب فوڈ اتھارٹی نے ایسی تمام کمپنیوں کے خلاف ایکشن لینے کا فیصلہ کیا ہے جو ویجیٹیبل فیٹ سے تیار کردہ فروزن ڈیزرٹس کو ڈیری آئس کریم کے طور پر فروخت کر رہی ہیں۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی کی طرف سے جاری کی گئی حالیہ وارننگ میں فروزن ڈیزرٹس کو ڈیری آئس کریم بناکر بیچنے والی کمپنیوں کومتنبہ کیا گیا ہے کہ ویجیٹیبل فیٹ سے بنی فروزن ڈیزرٹ کو ڈیری آئس کریم کے طور پر بیچنے کا سلسلہ بند کیا جائے سستے ریٹس پر بکنے والی فروزن ڈیزرٹس کے گمراہ کن ٹی وی اور اخباری اشتہارات کے علاوہ ڈبوں پر لگے لیبل درست کیے جائیں۔ان فروزن ڈیزرٹس میں ڈیری فیٹ کی جگہ ویجیٹیبل فیٹ استعمال کیا جاتا ہے جو بچوں کی دماغی اور جسمانی نشوونما کوروکتا ہے۔اس حوالے سے ڈی جی فوڈ اتھارٹی نورالامین مینگل کا کہنا تھا کہ حالیہ جائزے کے مطابق 44فی صد بچے نشوونماکی کمی کا شکار ہیں۔بچوں کی نشوونما کے لیے ڈیری فیٹ ضروری ہیں جبکہ ویجیٹیبل فیٹ ان کے لیے نقصان دہ ہے۔ پہلے مرحلے میں تمام فروزن ڈیزرٹس کے لیبل پر وارننگ "یہ آئس کریم نہیں فروزن ڈیزرٹ ہے اور ویجیٹیبل فیٹ سے بنی ہے"درج کروا رہے ہیں ۔دوسرے مرحلے میں ان تمام کمپنیوں کے خلاف ایکشن لیا جائے گا جن کے لیبل گمراہ کن اور اشتہارات مبہم پائے گئے۔نورالامین مینگل نے والدین سے بھی اپیل کی ہے کہ وہ اپنے بچوں کو فروزن ڈیزرٹس کی بجائے ڈیری فیٹ سے بنی آئس کریم کھلائیں۔

ویجیٹیبل فیٹ

مزید :

صفحہ آخر -