لائن مین زندگی و موت کی کشمکش میں مبتلا،حادثے کا ذمہ دار لائن سپرنٹنڈنٹ بحال

لائن مین زندگی و موت کی کشمکش میں مبتلا،حادثے کا ذمہ دار لائن سپرنٹنڈنٹ بحال

  

ملتان (سٹاف رپورٹر) شدید کرنٹ لگنے سے لائن مین زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ‘ حادثے کا ذمہ دار ایل ایس بحال کر دیا گیا‘ وزیر مملکت پانی و بجلی نے نوٹس لے لیا۔بتایا گیا ہے کہ ملتان الیکٹرک پاور کمپنی نے واپڈا ٹاؤن سب ڈویژن کے کرنٹ لگنے سے معذور ہونیوالے لائن مین II لیاقت علی اعوان کے حادثے کے ذمہ دار لائن سپرٹینڈنٹ I سعود کو ملازمت پر بحال کردیا ہے۔ انکوائری کمیٹی نے حادثے کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے سعود احمد کے خلاف سخت ترین محکمانہ کارروائی کا حکم دیا تھا۔ وزیر مملکت عابد شیر (بقیہ نمبر18صفحہ12پر )

علی نے واقعہ کا سخت نوٹس لیتے ہوئے میپکو کے چیف ایگزیکٹو آفیسر سے جواب طلب کرلیا ہے۔ ہائیڈرو یونین کے مرکزی جنرل سیکرٹری خورشید احمد خان نے بھی ریجنل و زونل عہدیداروں سے وضاحت طلب کرلی ہے۔ میپکو واپڈا ٹاؤن سب ڈویژن کے لائن سپرٹینڈنٹ I سعود احمد نے 23 فروری 2017ء کو لائن مین II لیاقت علی اعوان کو 11 کے وی پیر اکبر فیڈر پر کام کیلئے بھیجا تھا۔ شدید کرنٹ لگنے سے لیاقت علی اعوان کے دونوں بازو بری طرح سے متاثر ہوئے۔ ڈاکٹروں نے ایل ایم II کی جان بچانے کیلئے دونوں بازو کاٹ دئیے تھے اور اب بھی برن یونٹ میں داخل ہے۔ جہاں ڈاکٹرز انفیکشن سے متاثرہ لیاقت علی کی جان بچانے کی سرتوڑ کوشش کررہے ہیں۔میپکو انتظامیہ نے علاج معالجے کے مکمل اخراجات برداشت کرنے کا اعلان کیا تھا۔ لیکن چیف ایگزیکٹو آفیسر سیمت کوئی بھی افسر ایک مرتبہ عیادت کے بعد واپس نہیں آیا۔ وزیر مملکت نے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایل ایم II حادثے کے ذمہ داروں کو قرار واقعی سزا دی جائیگی۔ انہوں نے ذمہ دار ایل ایس کی بحالی اور دوبارہ واپڈا ٹاؤن سب ڈویژن میں تعیناتی کی تحقیقات کا بھی حکم دے دیا ہے۔

لائن مین

مزید :

ملتان صفحہ آخر -