مودی سرکار سیخ پا پاکستانی ہائی کمشنر کی طلبی ، قیدیوں کی رہائی روک دی ، آپ دہشتگردی بھی کرتے ہیں بلا کر احتجاجبھی کرتے ہیں عبدالباسط نے کھری کھری سنا د یں

مودی سرکار سیخ پا پاکستانی ہائی کمشنر کی طلبی ، قیدیوں کی رہائی روک دی ، آپ ...

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک / ایجنسیاں / نیٹ نیوز)بھارت اپنے جاسو س کل بھوشن یادیوکی سزائے موت کافیصلہ آتے ہی مودی سرکار سیخ پا ہو گئی، بھارت فوری طور پرمتحر ک ہوگیا، نئی دہلی میں پاکستانی ہائی کمشنرعبدالباسط کو وزارت خارجہ طلب کیا گیا اور کلبھوشن یادیوکے خلاف عدالتی کارروائی کی تفصیلات مانگ لی گئیں۔ بھارتی وزارت خارجہ کے بیان کے مطابق سیکرٹری خارجہ نے پاکستانی ہائی کمشنرعبدالباسط کوطلب کرکے کل بھوشن کے خلاف عدالتی کارروائی کی تفصیلات مانگی ہیں۔ بیان کے مطابق پاکستانی ہائی کمشنرکے حوالے کئے گئے مراسلے میں کہاگیا ہے کہ کل بھوشن یادیوکے خلاف ٹرائل کے بارے میں اسلام آباد میں بھارت کے ہائی کمیشن کوبھی آگاہ نہیں کیاگیا۔اگر کلبھوشن کے خلاف ٹرائل میں قانون اورانصاف کے بنیادی تقاضے پورے نہ ہوئے توبھارت کی حکومت اورعوام اسے منصوبے کے تحت قتل تصورکریں گے ۔ بھارت نے یہ بھی الزام عائدکیا کہ کلبھوشن کوایران سے اغواء کیاگیاتھا۔پاکستان میں اس کی موجودگی کبھی واضح نہیں کی گئی ۔بھارت نے دعویٰ کیاکہ اس نے 13 بار کلبھوشن تک رسائی مانگی لیکن پاکستان نے اس کی اجازت نہیں دی۔ دوسری جانب عبدالباسط نے بھارتی حکام کو کھری کھری سناتے ہوئے کہا ہے کہ ایک جاسوس کو سزا دیکر کوئی برا کام نہیں کیا ، ایک تو آپ دہشتگردی کرتے ہیں اور پھر ہمیں بلاکر احتجاج بھی کرتے ہیں۔بھارت نے مطالبہ کیا ہے کہ پاکستان کلبھوشنن یادیو کے خلاف عدالتی کارروائی کی تفصیلات فراہم کرے۔ پاکستانی ہائی کمشنر نے بھارتی سیکرٹری خارجہ کو جواباً کہا کہکلبھوشن یادیو کو سزا دیکر کوئی غلط کام نہیں کیا ۔ کلبھوشن یادیو کو سزائے موت پر بھارتی احتجاج مسترد کرتے ہوئے پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط نے کھری کھری سنا دیں۔نجی ٹی وی کے مطابأ عبدالباسط کا کہناتھا کہ ملکی سلامتی سے زیادہ کوئی چیز عزیز نہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہماری امن مذاکرات کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے۔ دوسری جانب کلبھوشن یادیو کو سزائے موت سنائے جانے کے بعد مودی سرکار نے سیخ پا ہوتے ہوئے اپنی جیلوں میں سزا کی مدت پوری کرنے والے درجنوں پاکستانی قیدیوں کی رہائی کا فیصلہ واپس لے لیا ہے۔ بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں کلبھوشن یادیو کو سزائے موت سنائے جانے کے بعد بھارتی حکومت نے فیصلہ کیاہے کہ وہ ان درجنوں پاکستانی قیدیوں کو رہا نہیں کرے گی جنہیں آج پاکستان کے حوالے کیاجانا تھا۔ رپورٹ کے مطابق حکومت سمجھتی ہے کہ پاکستانی قیدیوں کی رہائی کیلئے یہ مناسب وقت نہیں ۔ رپورٹ کے مطابق رہا کیے جانے والے ان پاکستانی قیدیوں نے سزا کی مدت پوری کرلی تھی اور ان کی یہ رہائی پاکستان اور بھارت کی طرف سے ایک دوسرے کی جیلوں میں سزا کی مدت پوری کرنے والے قیدیوں کی رہائی کے اقدام کے تحت ہونی تھی۔

بھارت۔ سیخ پا

مزید :

کراچی صفحہ اول -