مصنوعی ذہانت اور روبوٹکس کااستعمال ہر شعبہ کی ضرورت ہے،رانا تنویر

مصنوعی ذہانت اور روبوٹکس کااستعمال ہر شعبہ کی ضرورت ہے،رانا تنویر

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) نسٹ مین کیمپس میں نسٹ اور ایچ ای سی کے مشترکہ انتظام کے تحت ’’پاکستان میں صنعتی ترقی کے لئے روبوٹکس ٹیکنالوجی کے استعمال پر قومی ورکشاپ ‘‘ کاانعقاد کیا گیا۔رانا تنویر حسین، وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی نے افتتاحی سیشن سے خطاب کے دوران کہا کہ ترقی یافتہ ممالک میں علمی دنیا اور صنعت میں تعاون عرصہ دراز سے جاری ہے لیکن پاکستان میں دونوں شعبوں کااشتراک نیم دلی کا شکار رہا ہے۔ انہوں نے اس سمت میں مربوط کوششوں کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ یہ ورکشاپ تعلیمی ماہرین اور صنعتی پروفیشنلز کو ایک دوسرے کے قریب لانے کا اچھا فورم ثابت ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ مصنوعی ذہانت اور روبوٹکس کااستعمال زندگی کے ہر شعبہ کی ضرورت ہے۔لیفٹیننٹ جنرل نوید زمان، ہلال امتیاز ملٹری( ریٹائرڈ) ریکٹر NUSTنے اپنے خطاب میں کہا کہ NUSTنے اس شعبہ کی اہمیت کو بروقت پہچانا اور میکاٹرانکس انجینئرنگ کے شعبہ میں بیچلر آف انجینئرنگ ڈگری پروگرام شروع کیا۔ انہوں نے مثال دیتے ہوئے کہا کہ SUKURAوہیل چےئر جاپان کے ساتھ مفاہمت کی یادداشت کے تحت روبوٹکس ڈیپارٹمنٹ کے ریسرچرز جاپانی ریسرچرز کے ساتھ مل کر پاکستان میں Intellegentوہیل چےئر ٹیکنالوجی کو ترقی دینے میں مصروف عمل ہیں جس سے بصری یا ذہنی طور پر معذور افراد کو گھر اور دفتر میں حرکت کرنے میں مدد ملے گی۔اس موقع پر فیڈرل سیکرٹری وزارت سائنس و ٹیکنالوجی نے یونیورسٹی اور صنعتوں کو شراکت داری میں کام کرنے کی تلقین کی تاکہ آٹومیشن کے سستے حل تلاش کئے جاسکیں۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -