ریٹائرڈ لیفٹیننٹ کرنل کی گمشدگی ، راملوث ہونے کا شبہ،راولپنڈی میں مقدمہ درج

ریٹائرڈ لیفٹیننٹ کرنل کی گمشدگی ، راملوث ہونے کا شبہ،راولپنڈی میں مقدمہ درج

  

راولپنڈی( نیٹ نیوز/صباح نیوز)ملازمت کے بہانے نیپال بلا کرلاپتہ کیے جانے والے پاک فوج کے ریٹائرڈ لیفٹیننٹ کرنل حبیب ظاہرکے بیٹے محمد سعد حبیب نے تھانہ روات میں مقدمہ درج کرادیا ہے۔ریٹائرڈ کرنل کی گمشدگی میں دشمن ایجنسیوں کے ملوث ہونے کا شبہ ہے کیونکہ ریکروٹنگ ویب سائٹ بھارت کی نکلی ہے۔ پولیس نے اغوا و دھوکہ دہی کی دفعات 365/420/120B کے تحت مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کر دی ہے۔پاکستانی دفترخارجہ کے ترجمان نفیس زکریا نے کہا ہے کہ معاملے کی تحقیقات کیلیے نیپالی حکومت کے ساتھ رابطہ کیا ہے ۔ نیپال کے دفتر خارجہ کے ترجمان بھارت راج پوڈل کے مطابق ان کے لاپتہ ہونے کی تحقیقات کا آغازکر دیا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ وزارت داخلہ اور محکمہ پولیس کو واقعے کی تحقیقات کی ہدایت جاری کر دی ہے۔پاکستانی اداروں کی جانب سے حبیب ظاہرکی ای میلز پرکی گئی ابتدائی تحقیقات کے مطابق انہیں مارچ میں سٹارٹ سولوشنز نامی ویب سائٹ سے مارک تھامسن نے ای میل کے ذریعے ساڑھے 3 ہزار سے ساڑھے 8 ہزار ڈالر کی تنخواہ پر نائب صدر اور زونل ڈائریکٹر (سکیورٹی)کی پیشکش کی تھی۔ انہیں ملازمت کنفرم کرنے کیلیے کٹھمنڈو آنے کا کہا گیا اور عمان ایئرلائن کی بزنس کلاس کا ٹکٹ بھی بھیجاگیا۔کٹھمنڈو میں پاکستانی امورکے ذمے دار جاوید عمرانی نے کہا کہ نیپالی وزارت خارجہ کو گمشدگی سے آگاہ کردیا ہے اوراب ان کے جواب کا انتظار ہے۔نیپال پہنچنے پر جاوید انصاری نامی شخص نے انھیں نیپالی موبائل فون سم کارڈ بھی دیا تھا۔حبیب ظاہرکے اہلخانہ اور دوستوں کے مطابق برطانوی نمبر سے انٹرویوکیلیے آنے والا فون کمپیوٹرائزڈ تھا جبکہ ای میل اور اس سے منسلک ویب سائٹ کا ڈومین بھارت میں رجسٹرڈ ہے جس کے باعث تشویش ظاہرکی جارہی ہے کہ اس اغوا کے پیچھے را کا ہاتھ ہوسکتا ہے۔ راولپنڈی پولیس کو درخواست میں خدشہ ظاہرکیا گیا ہے کہ لیفٹیننٹ کرنل (ر) محمد حبیب ظاہرکو بیرون ملک ملازمت کا جھانسہ دیکر مخصوص ایجنڈا کی تکمیل کیلئے اغوا کرکے غیر ملکی ایجنسیوں کے حوالے کیا گیا۔ ملزموں کا ایجنڈا پاکستان دشمن ہوسکتاہے۔شبہ ہے کہ مارک تھامسن نامی شخص نے جاوید انصاری کے ذریعے پاکستان سے نوکری کے بہانے جعل سازی سے ورغلا کر بلایا، میرے والد چونکہ ایک رٹائرڈ آرمی آفیسر ہیں اس لیے خدشہ ہے کہ ان کو یہ افراد مخصوص ایجنڈا کے ساتھ مارک تھامسن کی کمپنی سٹارٹ سلوشن کے ذریعے دشمن ممالک کی ایجنسیوں کے حوالے کر سکتے ہیں۔ معلوم ہوا ہے کہ پولیس نے تفتیش کے دوران دیئے گئے فون نمبر اور ویب سائٹ سے متعلق چھان بین کی تو بیرون ملک کے دونوں نمبر مسلسل بند ملے۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -