ایرانی حکومت نے بھی کلبھوشن یادیو کی مشکوک سرگرمیوں سے بھارت کو آگاہ کر رکھا تھا : بھارتی میڈیا کا انکشاف

ایرانی حکومت نے بھی کلبھوشن یادیو کی مشکوک سرگرمیوں سے بھارت کو آگاہ کر رکھا ...
ایرانی حکومت نے بھی کلبھوشن یادیو کی مشکوک سرگرمیوں سے بھارت کو آگاہ کر رکھا تھا : بھارتی میڈیا کا انکشاف

  

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن )بھارتی میڈیا نے انکشاف کیا ہے کہ کلبھوشن یادیو کی ایران میں مشکوک سرگرمیوں سے متعلق ایرانی حکومت نے بھی بھارت کو آگاہ کر رکھا تھا ۔

”نوائے وقت “کے مطابق بھارتی اخبار کی رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ایران بھی کلبھوشن یادیو کی مشکوک سرگرمیوں کے بارے تحقیقات کررہا تھا او رایرانی سفیر نے نئی دہلی کو اس معاملے کے بارے غیر رسمی طور پر آگاہ بھی کردیا تھا۔وہ ایران کے راستے پاکستان آیا۔

شادی کی سالگرہ پر شعیب ملک نے شاندار کھیل کا مظاہرہ کرکے ثانیہ مرزا کو بہترین تحفہ دے دیا

انڈین ایکسپریس کی رپورٹ میں انکشاف کیا گیاہے کہ نیوی افسر کلبھوشن نے حسین مبارک کے فرضی نام سے اور L9630722 کے نمبر سے پاسپورٹ بنوایا تھا جو کے پونا سے بنوایا گیا تھا۔۔ کلبھوشن یادیو نے نومبر 2003 ءمیں پونے سے پاسپورٹ بنوایا جس پر اس کا نام حسین مبارک پٹیل درج تھا۔ نیوی میں کل بھوشن کے ساتھی اسے فراڈ شخص سمجھتے تھے جو لمبے لمبے عرصے تک غیرحاضر رہتا تھا۔

بھارتی لڑکی نےشادی کے ایک ہفتہ بعد ہی شوہر کو قتل کر دیاکیونکہ۔۔۔

اس کے علاوہ پاسپورٹ پر دیا گیا کل بھوشن کا گھر کا ایڈریس بھی نامکمل تھا۔اس کے بیرون ملک منفی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے وسیع اشارے بھی ملے ہیں۔ کل بھوشن ممبئی کے ریٹائرڈ اسسٹنٹ کمشنر آف پولیس کا بیٹا ہے۔ اخبار کے مطابق ایران میں بھی اس کی سرگرمیاں مشکوک تھیں۔نیوی میں ساتھیوں نے انکشاف کیا کہ کلبھوشن ڈیوٹی کے دوران اکثر غائب رہتا تھا جو کہ اس بات کے واضح اشارے تھے کہ وہ سرکار کے کسی کام میں ملوث ہے.

مزید :

بین الاقوامی -