شام پر امریکی حملے کے بعد عرب دنیا سے ایک اور انتہائی تشویشناک خبر آگئی، ایسا خطرناک کام ہوگیا کہ پل بھر میں تیل کی قیمتیں آسمان پر جاپہنچیں

شام پر امریکی حملے کے بعد عرب دنیا سے ایک اور انتہائی تشویشناک خبر آگئی، ایسا ...
شام پر امریکی حملے کے بعد عرب دنیا سے ایک اور انتہائی تشویشناک خبر آگئی، ایسا خطرناک کام ہوگیا کہ پل بھر میں تیل کی قیمتیں آسمان پر جاپہنچیں

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) شام پر امریکی حملے کے بعد پیدا ہونے والی کشیدگی اور لیبیا کی سب سے بڑی آئل فیلڈ بند ہونے کے باعث مارکیٹ میں تیل کی فراہمی میں واضح کمی ہوتے ہی اس کی قیمت میں اچانک ہوشربا اضافہ ہو گیا ہے۔ عالمی خبررساں ایجنسی رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق لیبیا میں ایک گروپ نے آئل ٹرمینل کی طرف جانے والی پائپ لائن بند کر دی تھی جس کے باعث ملک کی سب سے بڑی آئل فیلڈ ’صحارا‘ سے تیل کی نکاسی بند کر دی گئی جس کے نتیجے میں پیر کے روز تیل کی قیمت 56ڈالر (تقریباً 5ہزار 800پاکستانی روپے) فی بیرل کی سطح پر جا پہنچی۔

تیسری عالمی جنگ، طبل جنگ بج گیا، دنیا کی سب سے بڑی فوج نے روس کو نشانہ بنانے کی تیاری شروع کردی

شکاگو کے ’پرائس فیوچرز گروپ‘ کے تجزیہ کار فل فلائن کا کہنا تھا کہ ”لیبیا کی آئل فیلڈ کی بندش کے ساتھ ساتھ کئی ارضی سیاسی مسائل بھی تیل کی قیمت میں اضافے کا سبب بن رہے ہیں۔شام پر امریکہ کا حملہ اس کا ایک بڑا محرک ثابت ہوا ہے۔“ رپورٹ کے مطابق تیل کی قیمتوں میں اضافے کی ایک وجہ تیل پیدا کرنے والے ممالک کے مابین طے پانے والا معاہدہ بھی ہے جس میں انہوں نے 2017ءکے پہلے 6ماہ میں پیداوار میں 18لاکھ بیرل روزانہ کمی کرنے پر اتفاق کیا تھا۔ لیبیا اور نائیجیریا اس معاہدے میں شامل نہیں ہیں۔

مزید :

بزنس -