یہ سانپ کوئی عام سانپ نہیں بلکہ ایسی شرمناک عادت میں مبتلا ہے کہ پولیس نے گرفتار کرلیا، کیا عادت ہے؟ جان کر آپ بھی کانوں کو ہاتھ لگالیں گے

یہ سانپ کوئی عام سانپ نہیں بلکہ ایسی شرمناک عادت میں مبتلا ہے کہ پولیس نے ...
یہ سانپ کوئی عام سانپ نہیں بلکہ ایسی شرمناک عادت میں مبتلا ہے کہ پولیس نے گرفتار کرلیا، کیا عادت ہے؟ جان کر آپ بھی کانوں کو ہاتھ لگالیں گے

  

سڈنی (نیوز ڈیسک) معاشرے میں نشے کی لعنت کس قدر عام ہوچکی ہے اس کا اندازہ اس بات سے کیا جاسکتا ہے کہ انسانوں کے بعد اب حیوان بھی نشے کی لت میں مبتلا ہونے لگے ہیں۔ آسٹریلوی پولیس نے دارالحکومت کے نواح میں واقع منشیات بنانے والی ایک لیبارٹری پر چھاپہ مارا تو وہاں سے ایک اژدھے کو بھی پکڑا جو ’آئس‘ نامی نشے کا اس قدر عادی ہوچکا تھا کہ کئی ماہ تک اس کا علاج کرنا پڑا۔ 

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق چھ فٹ لمبے اژدھے کو سڈنی کے نواح میں قائم کی گئی غیر قانونی لیبارٹری سے اس وقت پکڑا گیا جب پولیس نے خفیہ اطلاعات ملنے پر اس لیبارٹری پر چھاپہ مارا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ یہ اژدھا بے حد مشتعل ہوجاتا تھا اور ہر چیز کو کاٹنے کو دوڑتا تھا۔

جب ویٹرنری ماہرین نے اس کا معائنہ کیا تو پتہ چلا کہ یہ منشیات بنانے والی لیبارٹری میں قید کے دوران آئس نامی نشے کا عادی ہوگیا تھا۔ اژدھے کا علاج کرنے والے ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اس کے جسم سے نشے کے اثرات ختم کرنے میں تقریباً ایک ماہ کا وقت لگا اور اسے نشے کی لت سے نجات دلوانے کے لئے مزید سات ماہ تک اس کا علاج کرنا پڑا۔

آسٹریلوی پولیس نے یہ دلچسپ انکشاف بھی کیا کہ سانپ منشیات کا کاروبار کرنے والے مجرموں کا پسندیدہ پالتو جانور ہوتے ہیں کیونکہ وہ ان کے ڈربوں کو منشیات اور ہتھیار ذخیرہ کرنے کے لئے استعمال کرتے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -