لاہور ہائیکورٹ کا نیا انٹرپرائز کیس مینجمنٹ سسٹم پہلے دن ہی دھوکہ دے گیا

لاہور ہائیکورٹ کا نیا انٹرپرائز کیس مینجمنٹ سسٹم پہلے دن ہی دھوکہ دے گیا
لاہور ہائیکورٹ کا نیا انٹرپرائز کیس مینجمنٹ سسٹم پہلے دن ہی دھوکہ دے گیا

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ کا نیا انٹرپرائز کیس مینجمنٹ سسٹم پہلے دن ہی دھوکہ دے گیا، آئی ٹی برانچ کے افسروں کے غیرتربیت یافتہ ہونے اور ناقص حکمت عملی کے باعث انٹرپرائز سسٹم کے ذریعے پہلے دن ہی ارجنٹ پیشی فہرستیں جاری نہ ہو سکیں۔

امریکی سفیر کی آرمی چیف سے ملاقات، خطے کی سیکیورٹی صورت حال پرتبادلہ خیال کیا گیا:آئی ایس پی آر

لاہور ہائیکورٹ میں کروڑوں روپے کی مالیت سے چند دن قبل انٹرپرائز کیس مینجمنٹ سسٹم کا افتتاح کیا گیا، نئے سسٹم کے تحت سائلین اور وکلاءکو جدید نظام عدل پر منتقل کرنا ہے تاہم نیا سسٹم پہلے دن ہی فعال نہیں کیا جا سکا، ا?ئی ٹی برانچ اور جوڈیشل برانچ کے افسروں اور ملازمین کی غیرتربیت یافتہ ہونے کی وجہ سے نئے سسٹم کے تحت پہلے دن ہی ارجنٹ مقدمات کی پیشی فہرستیں نہ نکل سکیں جس کی وجہ سے وکلاءاور سائلین کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، انتظامیہ کی طرف سے کمپیوٹر پر مینوئل طریقے سے چند ارجنٹ مقدمات کی پیشی فہرستیں نکال کر عدالتوں کے باہر آویزاں کی گئیں، ذرائع کے مطابق انٹرپرائز کیس مینجمنٹ سسٹم کے ذمہ داران اپنی نالائقی چھپانے کیلئے وکلاءاور سائلین کو ارجنٹ مقدمات دائر نہ کرنے کیلئے منتیں کرتے رہے، 10اپریل کی رات گئے تک عملہ انٹرپرائز سسٹم کے ذریعے ارجنٹ مقدمات کی پیشی فہرستیں تیار کرنے کیلئے سر کھپاتے رہے لیکن بات نہیں بن سکی۔

ذرائع کے مطابق انٹرپرائز سسٹم کو جامع طریقے سے چلانے کیلئے ہائیکورٹ کے پاس تربیت یافتہ افسر اور ملازمین ہی میسر نہیں ہیں، صرف چیف جسٹس سید منصور علی شاہ کی خوشنودی حاصل کرنے کیلئے جلد بازی میں انٹرپرائز سسٹم متعارف کرا دیا گیا اور متبادل پرانا نظام فوری بند کر دیا گیا جس کی وجہ سے مشکلات پیدا ہوئیں اور نئے انٹرپرائز سسٹم کو تنقید کا سامنا کرنا پڑا، ذرائع کا دعوی ہے کہ ہائیکورٹ انتظامیہ کے چند افسران دانستہ طور پر نئے انٹرپرائز سسٹم کو ناکام کرنے کے درپے ہیں، رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ سید خورشید رضوی نے اس حوالے سے کہا ہے کہ انٹرپرائز سسٹم نیا ہونے کی وجہ سے پہلے دن تھوڑا مسئلہ پیدا ہوا کیونکہ ابھی ہمارے ملازمین نئے سسٹم سے ناواقف ہیں۔

، انہوں نے کہا کہ ا?ئی ٹی برانچ کے افسران پیشی فہرستوں کی تیاری میں عملے کی معاونت کر رہے ہیں، امید ہے کہ 12اپریل کے لئے تمام عدالتوں کی پیشی فہرستیں انٹرپرائز کیس مینجمنٹ سسٹم کے ذریعے ہی نکالی جائیں گی ۔

مزید :

لاہور -