یونیورسٹی آف ایجوکیشن کی تعلیمی کانفرنس شروع ، 134مقالہ جات پیش کئے جائینگے

یونیورسٹی آف ایجوکیشن کی تعلیمی کانفرنس شروع ، 134مقالہ جات پیش کئے جائینگے

لاہور (لیڈی رپورٹر)یونیورسٹی آف ایجوکیشن کی ساتویں دو روزہ عالمی تعلیمی کانفرنس گزشتہ روز ٹاؤن شپ کیمپس میں شروع ہو گئی۔ اس سال کانفرنس کا موضوع ’’تحقیق و ترقی کے ذریعے پائیدار مستقبل کا حصول‘‘ ہے۔ کانفرنس میں دنیا بھر سے ممتاز ماہرین تعلیم، سکالرز اور نامور اساتذہ شرکت کر رہے ہیں۔ کانفرنس کے دوران 134مقالہ جات پیش کئے جائیں گے۔ کانفرنس کے افتتاحی اجلاس کے مہمان خصوصی صوبائی وزیر برائے اعلی تعلیم راجہ یاسر ہمایوں تھے، جنہوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ موجودہ حکومت تعلیم کو خاص اہمیت دے رہی ہے اور اس مقصد کے لئے ہم ہر سال تعلیمی بجٹ میں ضرورت کے مطابق اضافہ کرتے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی آف ایجوکیشن اس شاندار کانفرنس کے انعقاد پر مبارک باد کی مستحق ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان جیسے ترقی پذیر ممالک میں اس قسم کی کانفرنس کا انعقاد وقت کی اہم ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بہت جلد کالجز میں ملٹی میڈیا پراجیکٹ کا آغاز کیا جا رہا ہے تاکہ دوردراز علاقوں کے طلبا ء کو بھی بہترین اساتذہ سے فیض یاب ہونے کا موقع ملے۔ پنجاب کے بہترین کالجز کے اساتذہ طلباء کو ملٹی میڈیا کے ذریعے آن لائن پڑھائیں گے۔ تعلیم کے فروغ میں ٹیکنالوجی کا استعمال انتہائی اہم ہے۔ کمیونیٹی کالجز کا دائرہ کار وسیع کر رہے ہیں جہاں طلباء کوجاب مارکیٹ اور انڈسٹری کی ضروریات کو مد نظر رکھتے ہوئے مختلف مضامین کی تعلیم دی جائے گی۔ کسی ملک کی ترقی کا دارومدار ٹیکنالوجی اور سائنسی علوم کے میدان میں معیاری تحقیق پر ہوتا ہے۔ تحقیق کے معیار کو بہتر کرنے اور تحقیق کے کلچر کو فروغ دینے کے لئے ہائر ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ یونیورسٹیز کو ہر ممکن معاونت فراہم کر رہا ہے۔جامعات کی عالمی درجہ بندی میں بہتری کے لئے جامع منصوبہ بندی کے ساتھ کام کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ ہمارا تعلیمی نظام طلباء میں تخلیقی صلاحتیں پیدا کرنے میں ناکام رہا ہے۔ ہم ایسا تعلیمی نظام اپنانے کی کوشش کر رہے ہیں جو طلباء میں تخلیقی صلاحیتوں کو ابھارے۔امتحانی نظام میں اصلاحات سے ہی رٹا سسٹم کی حوصلہ شکنی کی جاسکتی ہے۔ انشاء اللہ پاکستان تعلیم کے میدان میں نمایاں مقام حاصل کرے گا۔ وائس چانسلر یونیورسٹی آف ایجوکیشن پروفیسر ڈاکٹر رؤفِ اعظم نے شرکاء کانفرنس کو خوش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹی آف ایجوکیشن کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ ہم مسلسل سات سالوں سے تعلیم کے حوالے سے عالمی کانفرنس کا انعقاد کر رہے ہیں، جو ہماری علم دوستی کا مظہر ہے۔ انہوں نے کہا کہ رواں سال کانفرنس کا موضوع نہایت اہمیت کا حامل ہے کیوں کہ ہم جانتے ہیں کہ بہتر مستقبل کا انحصار مسلسل تحقیق و ترقی پر ہے اور تحقیق و ترقی کی بنیاد ہی تعلیم ہے۔ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کانفرنس کے چیف آرگنائزر ڈاکٹر ایاز محمد خان نے کہا کہ کانفرنس کے انعقاد کا بڑا مقصد یہ ہے کہ پاکستان کے تعلیمی مسائل کے عملی اور قابل حصول حل کی طرف قدم بڑھایا جائے۔ اس موقع پرطلبہ و طالبات سمیت زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کی کثیر تعداد بھی موجود تھی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4