لاہور ہائیکورٹ ،زبردستی نکاح اور اسلام قبول کروانے پر مسیحی لڑکی کو والدین کیساتھ بھیجنے کا حکم

لاہور ہائیکورٹ ،زبردستی نکاح اور اسلام قبول کروانے پر مسیحی لڑکی کو والدین ...

لاہور (نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس طارق سلیم شیخ نے زبردستی نکاح اوراسلام قبول کروانے کے بیان کے بعد مسیحی لڑکی کو والد ین کے ساتھ بھیجنے کا حکم دے دیا۔فاضل جج نے یہ حکم فیصل آباد کے جاوید مسیح کی طرف سے دائر حبس بے جا کی درخواست پرجاری کیا، درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ مسیحی برادری کے افراد نے میری 14 سالہ بیٹی کو اغواء کر کے آگے فروخت کر دیا ہے، میری مسیحی بیٹی شالٹ مسیح کو زبردستی اسلام قبول کروا کر ظفر نامی شخص کو فروخت کیا گیا ہے، ظفر نامی شخص نے میری بیٹی کے ساتھ زبردستی نکاح کر لیا، عدالت کے حکم پرتھانہ ٹھیکری والا کے اے آیس آئی حق نواز نے 14 سالہ لڑکی کو عدالت میں پیش کیا ،لڑکی شالٹ مسیح نے عدالت میں بیان دیا کہ مجھے اغواء کرنے بعد زبردستی اسلام قبول کروا کر فروخت کیا گیا، لڑکی نے بتایا کہ ظفر نامی مسلم شخص سے میرا نکاح بھی زبردستی کروایا گیا، لڑکی نے عدالت میں بیان دیا کہ وہ اپنے والدین کے ساتھ جانا چاہتی ہے ،عدالت نے لڑکی کے بیان کی روشنی میں اسے والدین کے ساتھ بھیج دیا۔

مزید : صفحہ آخر