معتدل معاشرے کی تشکیل کیلئے با مقصد نصاب تعلیم لازمی ،ڈاکٹرطاہر القادری

معتدل معاشرے کی تشکیل کیلئے با مقصد نصاب تعلیم لازمی ،ڈاکٹرطاہر القادری

لاہور(نمائندہ خصوصی ) منہاج القرآن انٹرنیشنل کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہاہے تنگ نظری سے انتہا پسندی اور پھر دہشتگردی جنم لیتی ہے۔یہ انسانی المیہ راتوں رات جنم نہیں لیتا اس کے متعدد محرکات ہیں،با مقصد نظام تعلیم بنیادی اہمیت کا حامل ہے،بچے کو اسکی تعلیم و تر بیت کے آغاز کے مرحلہ پر ہی امن ،رواداری اور احترام انسانیت کی تعلیم اور تربیت ملنی چاہیے ہم بیج کو پودے اور پھر تن آور درخت میں تبد یل ہونے کا انتظار کرتے ہیں جبکہ بیج کو تلف کرنا آسان اور درخت کاٹنا مشکل ہو جاتا ہے۔گزشتہ روزاو آئی سی کے دو روزہ اجلاس کے اختتا می سیشن سے خطاب کرتے ہوئے انکامزید کہنا تھانظام تعلیم کو ہر قسم کے تعصب و نفرت سے پاک اور با مقصد ہونا چاہیے،رواداری پر مبنی معتد ل معاشرے کی تشکیل میں با مقصد نصاب تعلیم کی حیثیت خشت اول کی ہے۔غربت و بیروزگاری کادہشتگردی کے فروغ میں بڑا کردار ہے،دہشتگرد عناصر غربت اور بیروزگاری اور احساس محرومی کو اپنی مذموم کارروائیوں کیلئے استعمال جبکہ انہی سماجی مسائل سے اپنے لئے افرا د ی قوت حاصل کرتے ہیں۔ عالم اسلام باہمی تعاون اور ایک دوسرے کے وسائل و تکنیکی مہارت کو برؤے کار لا کرغربت،بیروزگاری کے مسائل پر قابو پا سکتا ہے۔ انہوں نے اہم ترین موضوع پر کانفرنس کے انعقاد پر سیکرٹری جنرل او آئی سی ڈاکٹر یوسف احمد کو مبارکباد دیتے ہو ئے کہا گریٹ ڈبیٹ اور وسیع تر مشاورت میں ہی دکھتے ہوئے مسائل کا حل ہے ۔قبل ازیں ڈاکٹر یوسف احمد نے ڈاکٹر طاہر القادری کو پر جو ش انداز میں خوش آمدید کہا ۔ او آئی سی کے اختتامی اجلاس میں منظور کی جانیوالی متفقہ قرارداد میں طاہر القادری کا نام لیکر فروغ امن اور ا نسداد دہشتگردی کے حوالے سے انکی عالمگیر علمی خدمات کو سراہا ،بالخصوص متفقہ قرارداد کے ایک پیراگراف میں طاہر القادری کی طرف سے 2010 میں خود کش دھماکوں اور انسداد دہشتگردی کیلئے تحریر کردہ 600 صفحات پر مشتمل فتویٰ اور 2015 میں فروغ امن نصاب مرتب کر نے پر انہیں زبردست خراج تحسین پیش کیا گیا اور قرار داد میں یہ تجویز کیا گیا کہ عالم اسلام کی تمام یونیورسٹیاں و جامعات اسے اپنے نصاب کا حصہ بنائیں اور استفادہ کریں ۔ قرارداد کے ایک اور پیرا گراف میں منہاج القرآن انٹرنیشنل کی فروغ امن کیلئے عالمگیر خدمات کو بھی سراہا گیا۔ طاہر القادری نے او آئی سی کے اجلاس میں 25منٹ سے زائد خطاب کیا اس دوران منتظمین او آئی سی کی طرف سے منہاج القر آ ن کی خدمات کی تصویری جھلکیاں شرکائے کانفرنس کو دکھائی جاتی رہیں۔انہیں او آئی سی کی طرف سے خصوصی یادگاری شیلڈ بھی پیش کی گئی۔ ا س موقع پر منہاج القرآن انٹرنیشنل کی سپریم کونسل کے چیئرمین ڈاکٹر حسن محی الدین قادری اور منہاج القرآن ویمن لیگ انٹرنیشنل کی صد ر ڈاکٹر غزالہ حسن قادری بھی انکے ہمراہ تھے۔ڈاکٹر طاہر القادری نے او آئی سی کے دونوں اجلاسوں میں شرکت کی جبکہ سعودی عرب ،الجزا ئر ، مراکو،بنگلہ دیش ،افغانستان اور افریقہ کے وزراء ،سفرا ،عالمی شہرت یافتہ جامعات کے سربراہان سے بھی ملاقاتیں کیں۔

طاہر القادری

مزید : صفحہ آخر