کشیدگی پاکستان انڈیا کے مفاد میں نہیں، باہمی اتفاق رائے ضروری، شیریں مزاری

کشیدگی پاکستان انڈیا کے مفاد میں نہیں، باہمی اتفاق رائے ضروری، شیریں مزاری

اسلام آباد(این این آئی)وفاقی وزیر انسانی حقوق ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہاہے کہ کشیدگی پاکستان اور انڈیا کے مفاد میں نہیں، سٹریٹیجک استحکام کیلئے باہمی اتفاق رائے کی ضرورت ہے ، ہائبرڈ وار ایک غیر روایتی اور سائبر جنگ ہے، ہائبرڈ جنگ کے حوالے سے ٹھوس سیاسی فیصلے کرنے ہوں گے۔ بدھ کو جنوبی ایشیاء میں استحکام اور درپیش چیلنجز سے متعلقہ کانفرنس میں وزیر انسانی حقوق ڈاکٹر شیریں مزاری نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہاکہ 2018 میں ہم نے ہائبرڈ وار کا لفظ سنا، یہ جنگ کی ایک نئی قسم ہے۔ شیریں مزاری نے کہاکہ ہائبرڈ وار ایک غیر روایتی اور سائبر جنگ ہے۔انہوں نے کہاکہ ہائبرڈ وار کے ٹول بدلے ہیں لیکن ہائبرڈ وار پہلے سے جنگی سٹریٹیجی کا حصہ رہی۔انہوں نے کہاکہ لائن آف کنٹرول پر مسلسل انڈیا کے اٹیک کا کیا مقصد ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کشیدگی کو کم کرنا چاہتا ہے۔انہوں نے کہاکہ ہمیں اپنے خطے میں سٹریٹیجک استحکام لانا ہے۔انہوں نے کہاکہ کشیدگی پاکستان اور انڈیا دونوں کے مفاد میں نہیں ۔انہوں نے کہاکہ سٹریٹیجک استحکام کیلئے باہمی اتفاق رائے کی ضرورت ہے ۔انہوں نے کہاکہ دونوں ممالک کے درمیان ملٹری ہاٹ لائن قائم کرنے کی ضرورت ہے ۔انہوں نے کہاکہ انڈیا اور پاکستان دونوں کے پاس زیادہ ذرائع نہیں ۔انہوں نے کہاکہ ہمیں ڈائیلاگ کرنیکی ضرورت ہے ۔انہوں نے کہاکہ انڈیا اورپاکستان دونوں جانب سے فورسز کی کمی کی جانی چاہیے۔انہوں نے کہاکہ جنوبی ایشیاء میں نیوکلیئر طاقتوں کے ہوتے ہوئے استحکام بڑا چلینج ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان نے بھارت کے کولڈ سٹارٹ ڈاکٹرائن کا بہتر انداز میں جواب دیا۔

مزید : صفحہ آخر