شانگلہ کے کونے کونے میں پودے لگائے جائینگے‘ محمد فیاض شیرپاؤ

شانگلہ کے کونے کونے میں پودے لگائے جائینگے‘ محمد فیاض شیرپاؤ

الپوری(نمائندہ پاکستان)شا نگلہ کے ڈپٹی کمشنرمحمد فیاض خان شیرپاؤ نے کہا کہ کلین اینڈگرین پاکستان مہم کے تحت شانگلہ کے کونے کونے میں پودے لگائے جائیں گے ،کلین اینڈ گرین مہم کو کامیاب بنانے میں ہر شہری اپنا کردار اداکرکے اپنے حصے کا پودے لگائے،شانگلہ کو سرسبز و شاداب بنانا اولین ترجیح ہے،زیادہ سے زیادہ پودے لگا کر ماحول کو خوشگوار بنائے،شانگلہ مختلف قسم کے جنگلات اورچراگاہوں اور قدرتی جھیلوں سے مالا مال ہے تا ہم اب بھی یہاں جنگلات میں اضافہ کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ ڈی ا یفارسٹیشن سے عالمی ماحولیاتی تبدیلی کا خطرہ رونماء ہورہی ہے،جنگلات کے کمی سے انسانی زندگی پر منفی اثرات مرتب ہو رہی ہیں،ہمیں اپنے ماحول میں درختوں کو لگا کرموجودہ عالمی خطرات سے نمٹ سکتے ہیں،حکومت جنگلات کے رقبہ بڑھانے کیلئے مختلف پراجیکٹس کے ذریعے مفت پوداجات ،نرسریز،ہزاروں ہیکٹر رقبہ جات پر جنگلات لگا رہی ہے ،عوام حکومت کے ساتھ مل کرکلین اینڈ گرین پاکستان مشن کو کامیاب بنائیں،میڈیا جنگلات کے حوالے سے عوام میں شعور اجاگر کرنے کیلئے کردار ادا کریں،ضلعی انتظامیہ محکمہ جنگلات کے ساتھ مکمل تعاون کر رہی ہے اس حوالے سے تمام د ستیا ب سہولیات کو بروئے کار لاکر اقدامات اٹھا رہی ہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزشانگلہ یونیورسٹی کیمپس الپوری میں محکمہ جنگلات الپوری فارسٹ ڈویژن شانگلہ کے زیر اہتمام کلین اینڈگرین پاکستان مہم کے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،اس موقع پر ڈپٹی کمشنرمحمد فیاض شیرپاؤ، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرمقبول حسین ،ڈویژنل فارسٹ افسر الپوری شانگلہ عدنان علی،سب ڈویژنل فارسٹ افسر عمیرنواز ،تحصیل ناظم الپوری، پروفیسر وحید عبد اللہ خان ، اسسٹنٹ ڈائریکٹر نصیر خان ، اسسٹنٹ کمشنر الپوری نے پودے لگا کر کلین اینڈ گرین پاکستان مہم کا آغاز کیا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈویژنل فارسٹ افسر الپوری شانگلہ عدنان علی نے کہا کہ جنگلات کی کٹائی سے سیلاب کا خطرہ بڑھ جاتا ہے،زمین کا کٹاؤ ،موسمیاتی تبدیلی،اکسیجن کی کمی رونما ہوتی ہے ما حول کو صاف ستھرا رکھنے کیلئے درختوں کو لگانا انتہائی اہمیت کے حامل ہیں،درخت چھوٹے ڈیموں کی حیثیت رکھتی ہے اور بارش کی پانی کو سٹور کررکھتی ہے اور گرمیوں میں درخت یہ پانی چھوڑ کر چشموں کی شکل میں نکل کر ہمارے کام اتی ہے۔ مقررین نے کہا کہ کسی بھی ملک کیلئے 25فیصد جنگلات کا ہونا لازمی ہیں۔ جنگلات پانی کی فراہمی کے حوالے سے بھی اہمیت رکھتی ہے ،شانگلہ میں جہاں بھی جنگلات کی کٹائی کے شکایات ائی اس پر فوری کارروائی ہو گی،کسی کو بھی غیر قانونی طور پر کٹائی درختان اجازت نہیں دیں گے۔ تقریب کے اخر میں ضلعی انتظامیہ کے افسران نے فارسٹ کے تعاون سے شانگلہ یونیورسٹی کیمپس کے طلباء میں پودے تقسیم کئے اور ان کو مزید پودے لگانے کی ترغیب دی ۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر