اسلام کو دہشت گردی کے ساتھ جوڑنا بھی دہشت گردی ہے: شیخ الاسلام ڈاکٹر علامہ طاہر القادری

اسلام کو دہشت گردی کے ساتھ جوڑنا بھی دہشت گردی ہے: شیخ الاسلام ڈاکٹر علامہ ...
اسلام کو دہشت گردی کے ساتھ جوڑنا بھی دہشت گردی ہے: شیخ الاسلام ڈاکٹر علامہ طاہر القادری

  

ریاض (وقار نسیم وامق) ادارہ منہاج القرآن کے سربراہ شیخ الاسلام ڈاکٹر علامہ محمد طاہر القادری کا کہنا ہے کہ دہشت گردی کا کوئی مذہب نہیں ہوتا بلکہ اسلام کو دہشت گردی کے ساتھ جوڑنا بھی دہشت گردی کے زمرے میں آتا ہے علامہ طاہر القادری سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں صحافیوں سے گفتگو کر رہے تھے۔

شیخ الاسلام علامہ طاہر القادری سعودی عرب میں اسلامی تعاون تنظیم او آئی سی کے زیر اہتمام دہشت گردی کے خاتمے کے لئے منعقد ہونے والی کانفرنس میں شرکت کے لئے پہنچے ہیں جہاں انہوں نے پاکستانی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ انہیں او آئی سی کی خصوصی دعوت پر بلایا گیا ہے، صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے علامہ طاہر القادری نے کہا کہ دہشت گردی کا کسی مذہب سے تعلق نہیں اس کے علاوہ دین اسلام کو دہشت گردی سے جوڑنا بھی دہشت گردی کے زمرے میں آتا ہے جس سے مغربی دنیا میں اسلاموفوبیا پھیلاتا ہے مگر اب مغربی دنیا بھی یہ جان چکی ہے کہ دہشت گردی کا کوئی مذہب نہیں ہے علامہ طاہر القادری نے کہا کہ او آئی سی ایک اچھا پلیٹ فارم ہے وہ اس کے ذریعے جہاد کے اصل فلسفے کو اجاگر کریں گے اور بتائیں گے کہ کیسے لوگ سادہ لوح مسلمانوں کو گمراہ کرتے ہیں اور اپنے مذموم مقاصد کے لئے استعمال کرتے ہیں علامہ طاہر القادری نے کہا کہ انہوں نے ہمیشہ دہشت گردی کو روکنے اور دہشت گردی کے اسباب کے بارے میں گفتگو کی ہے اور وہ او آئی سی کے پلیٹ فارم سے آگاہی دیں گے کہ ریاست کے علاوہ کسی گروہ یا کسی تنظیم کو جہاد کا اعلان کرنے کا اختیار نہیں ہے، اسلام محبت اور امن کا دین ہے اس نے ہمیشہ ناحق خون بہانے سے منع کیا ہے۔

اوورسیز پاکستانیوں کے کردار کے حوالے سے انکا کہنا تھا کہ اوورسیرز پاکستانی ملک سے باہر اپنے ملک کی پہچان اور نمائندگی کرتے ہیں اس لئے انکو چاہئیے کہ وہ جس ملک میں رہیں وہاں کے قوانین کی پابندی لازمی کریں اور اپنے ملک کو اچھے انداز میں پیش کریں اپنے کرادر اور اخلاق سے اپنے آپکو اور ملک کی اچھی پہچان کا باعث بنیں۔

مزید : عرب دنیا