ڈیرہ، ما ہ صیام میں واپڈا کی ظالمانہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری 

ڈیرہ، ما ہ صیام میں واپڈا کی ظالمانہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری 

  

      ڈیر ہ اسماعیل خان(بیورو رپورٹ)ماہ صیام میں واپڈا کی ظالمانہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری،روزہ دار اندھیرے میں سحر اور افطار کے علاوہ اندھیرے میں نمازیں اور تراویح ادا کرنے پر مجبور، واپڈا کے مظالم کیخلاف وکلا کی عدالتی جنگ کام آئی نہ تاجروں کے احتجاج،شدید گرمی اور لوڈ شیڈنگ کے ساتھ ساتھ رہی سہی کسر مچھروں نے پوری کردی، ڈینگی اور ملیریاکی وبا پھیلنے کا خدشہ، ذمہ دار حکام سے نوٹس کا مطالبہ۔ تفصیلات کے مطابق گرمی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی واپڈا نے بھی ظالمانہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ طویل کردیا ہے، شہری و مضافات علاقوں میں 16سے18گھنٹے کی ظالمانہ لو شیڈنگ کے علاوہ اڈے کاٹنے کا سلسلہ جاری ہے۔ ماہ صیام میں حکومت کی جانب سے سحر و افطار اور نماز تراویح کے اوقات میں لوڈ شیڈنگ نہ کرنے کے دعوؤں کو واپڈا کے مقامی ذمہ داروں نے ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا ہے۔ واپڈا کی جانب سے سحر و افطار اور نماز تراویح کے اوقات میں لوڈ شیڈنگ اور اڈے کاٹنے کے باعث شہری اندھیرے میں سحر وافطار کے علاوہ مغرب عشا، تراویح اور فجر کی نمازیں بھی اندھیروں اور گرمی میں ادا کرنے پر مجبورہیں۔ واپڈا کی جانب سے ظالمانہ لوڈ شیڈنگ کیخلاف تاجروں اور شہریوں کے احتجاج اور وکلا برادری کی جانب سے عدالتی جنگ بھی واپڈا کو نہ سدھار سکی۔ دوسری جانب شدید گرمی اور لوڈ شیڈنگ کے ساتھ ساتھ رہی سہی کسر مچھروں نے پوری کردی۔ شہر بھر میں صفائی کی ابتر صورتحال کے باعث جگہ جگہ گندگی کے ڈھیر مچھروں کی فیکٹریاں بن چکے ہیں۔ محکمہ صحت،ٹی ایم اے اور واسا کی جانب سے مچھروں کی تلفی کیلئے ڈینگی اور مچھر مار سپرے نہ کرنے سے شہر اور مضافات میں ڈینگی اور ملیریاکی وبا پھیلنے کابھی خدشہ ہے، شہریوں نے ضلعی انتظامیہ اور دیگرذمہ دار حکام سے فوری اصلاح احوال کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -