ماہ رمضان میں افغانی قصائیوں   کی من مانیاں عروج پر 

     ماہ رمضان میں افغانی قصائیوں   کی من مانیاں عروج پر 

  

جہانگیرہ شیدو(نمائندہ پاکستان) اکوڑہ خٹکماہ رمضان میں افغانی قصائیوں کی من مانیاں عروج پر  میں بچھڑے کاہڈی والاموٹاگوشت 700 روپے فی کلو فروخت کرنے لگے۔ضلعی انتظامیہ نے چند ماہ قبل گوشت کی قیمت 300 روپے فی کلو سے بڑھا کر 400 روپے فی کلو کر دی تھی۔افغان قصائیوں نے حکومت پاکستان کے نرخ نامے دوکانوں سے ہٹا کر 700 روپے فی کلو بچھڑے کا گوشت اور قیمہ 900 روپے فی کلو فروخت کرنے لگے ضلعی انتظامیہ کی خاموشی لحمہ فکریا ہے۔تفصیلات کے مطابق اکوڑہ خٹک میں مہنگائی کی نئی لہر نے غریب طبقے کو تباہ کر کے رکھ دیا ہے ایک طرف سبزیوں دال چاول گھی آٹے کے ہوش رہبا نرخوں میں اضافہ کے ساتھ ساتھ اب اکوڑہ خٹک مہاجربازار میں افغان قصائیوں نے بھی حکومت پاکستان میں بڑی ہوئی مہنگائی اور ماہ رمضان کے مقدس ماہ میں غریب طبقے کو لوٹنے کے لئے خود ساختہ گوشت قیمہ کے نرخ بڑھا دے ہیں۔ضلع انتطامیہ کے ساتھ چند ماہ قبل قصائیو ں کے مذکرات کے بعد ضلعی انتظامیہ نے گوشت کے نرخ 300 روپے فی کلو سے بڑھا کر 400 روپے فی کلو کر دے تھے جبکہ ضلع صوابی کے اے سی نے چند دن قبل ماہ رمضان میں قصائیوں کے ساتھ مذکرات کر کے موٹے گوشت کی قیمت 450 روپے فی کلو کر دی ہے جبکہ ضلع نوشہرہ انتظامیہ نے تاحال قصائیوں کو کھلی چھٹی دے رکھی ہے افغان قصائیوں نے گوشت کے نرخ میں خود ساختہ اضافہ کر کے 400 روپے سرکاری نرخ سے بڑھا کر 700 روپے فی کلو ہڈی والا گوشت جبکہ قیمہ900 روپے فی کلو فروخت کر رہے ہیں اس تمام تر صورت حال پر ضلعی انتظامیہ نے مکمل خاموشی اختیار کر رکھی ہے جو لحمہ فکریا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -